سنڈے اسپیشلطب و صحت

مسوڑھوں سے خون آنا: مسوڑھوں سے بہنے لگا ہے خون اور ہوتا ہے درد تو یہ 6 گھریلو ٹوٹکے کارآمد ہوں گے، چند دنوں میں مسوڑھے صحت مند ہو جائیں گے

گھریلو علاج: دانتوں کی صحیح دیکھ بھال نہ کی جائے تو انہیں ٹوٹنے میں دیر نہیں لگتی۔ مسوڑھوں سے خون آنا اس بات کی علامت ہے کہ آپ اپنے دانتوں کی صحیح دیکھ بھال نہیں کر رہے ہیں۔ تاہم مسوڑھوں سے خون آنے کی بہت سی وجوہات ہوسکتی ہیں لیکن غلط برش کرنا، پلاک کا جمع ہونا، گندگی کو دور کرنے کے لیے دانتوں کا فلاس کرنا، دانتوں کو نقصان پہنچانے والا کھانا کھانا یا طرز زندگی سے متعلق مسائل اس کی بڑی وجہ ہوسکتی ہیں۔ ایسے میں یہ بہت ضروری ہے کہ اگر آپ کو وقت پر مسوڑھوں سے تھوڑا سا بھی خون آجائے تو اسے ٹھیک کرنے پر توجہ دیں۔

مسوڑھوں سے خون آنے اور سوجن کا گھریلو علاج۔

گرم پانی کے ساتھ گرگرا

آپ کے مسوڑھوں کو گرم پانی میں نمک ملا کر کلی کرنے سے آرام آجائے گا۔ مسوڑھوں سے خون آنا بند ہو جائے گا اور سوجن کی وجہ سے ہونے والا درد بھی کم ہو جائے گا۔ اسے دن میں 4-5 بار دہرائیں۔

ہلدی کا پیسٹ

ہلدی میں موجود خصوصیات جسم کے دیگر حصوں کی طرح مسوڑھوں کو بھی فائدہ پہنچاتی ہیں۔ ہلدی کے پیسٹ کو مسوڑھوں پر رگڑیں اور 10 منٹ تک رکھنے کے بعد پانی سے دھولیں۔ ایسا دن میں 2-3 بار کریں، مسوڑھوں کو آرام آجائے گا۔

تیل پُلِنگ

ناریل کے تیل سے پُلِنگ یا گرگرا کرنا دانتوں اور مسوڑھوں کے لیے فائدہ مند ثابت ہو سکتا ہے۔ اس سے منہ میں جراثیم، پلاک اور پائوریا کا مسئلہ دور ہو جاتا ہے۔ یہ زبانی صحت کو برقرار رکھتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

دل کی صحت مند غذا میں کن چیزوں کو شامل کرنا چاہیے اور کن چیزوں سے پرہیز کرنا چاہیے؟ یہاں جانیں سب کچھ

جلد کی دیکھ بھال: سوتے وقت لگائیں تیل ، داغ ، دھبے، جھریاں اور پنمپل بالکل ختم ہو جائیں گے، چہرہ چمکنے لگے گا

شہد

شہد سے مسوڑھوں کی مالش کرنے سے خون بہنے اور سوجن کے مسئلے سے نجات ملتی ہے۔ شہد کی سوزش مخالف خصوصیات ایک مسوڑھوں سے دوسرے مسوڑھوں میں ہونے والے انفیکشن کو روکتی ہیں۔

تریفلا

ترپھلہ کو گرم پانی میں ملا کر گارگل کرنے سے مسوڑھوں سے خون آنا بند ہو جاتا ہے۔ یہ مسوڑھوں کی صحت کے لیے بہت فائدہ مند سمجھا جاتا ہے۔

ناریل کا تیل

مسوڑھوں پر ناریل کے تیل کی مالش کرنا بھی مسوڑھوں سے خون آنے یا سوجن کے لیے ایک مؤثر نسخہ ہے۔ آپ یہ صبح اور شام کر سکتے ہیں۔

دستبرداری : یہ مواد بشمول مشورے، صرف عام معلومات فراہم کرتا ہے۔ یہ کسی بھی طرح مستند طبی رائے کا متبادل نہیں ہے۔ مزید تفصیلات کے لیے ہمیشہ کسی ماہر یا اپنے ڈاکٹر سے رجوع کریں۔ قومی ترجمان اس معلومات کی ذمہ داری قبول نہیں کرتا۔

ان خبروں کو بھی پڑھیں

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button