اہم خبریںبہارپٹنہ

پولیس پر برسے بہار کے اسمبلی اسپیکر ، کہا- پکڑتے ہیں شراب کی 100 بوتلیں، تو دکھاتے ہیں صرف 5

  • بہار قانون ساز اسمبلی کے اسپیکر وجے کمار سنہا نے جمعرات کو بہار پولیس کی سخت تنقید کی
  • پولیس پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے سپیکر اسمبلی نے کہا کہ پولیس کا من مانی بہت بڑھ گیا ہے

بہار – شراب پر بہار میں مکمل پابندی عائد ہے پھر بھی شراب سے متعلق آئے دن تنازعات سامنے آتے رہتے ہیں۔ شراب پر پابندی کے باوجود بہار کے کئی اضلاع سے روزانہ شراب کی بوتلیں ضبط کی جارہی ہیں۔ ایسے میں شراب کی اسمگلنگ اور غیر قانونی شراب کے کاروبار کے معاملے سامنے آتے رہتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

گھر بیٹھے آدھار کارڈ میں اپنا موبائل نمبر یا نام، پتہ تبدیل کریں، جانیں یہ آسان طریقہ

بہار قانون ساز اسمبلی کے اسپیکر نے بھی شراب پر پابندی کو لے کر بہار پولیس کے کام کاج پر سوال اٹھائے ہیں۔ بہار قانون ساز اسمبلی کے اسپیکر وجے کمار سنہا نے جمعرات کو بہار پولیس کی سخت تنقید کی۔ نتیش حکومت کی پولس پر سوال اٹھاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بہار پولس اگر شراب کی 100 بوتلیں پکڑتی ہیں تو صرف 5 بوتلیں دکھائی جاتی ہیں۔

پولیس پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے سپیکر اسمبلی نے کہا کہ پولیس کا من مانی بہت بڑھ گیا ہے۔ پولیس کے اعلیٰ افسران سپیکر اسمبلی کی بات تک نہیں سنتے۔ اسپیکر وجے کمار سنہا نے کہا کہ بہار پولس کی بزدلی اور کمزوری کی وجہ سے شراب کے اسمگلر بہار میں شراب بیچنے میں کامیاب ہو رہے ہیں۔ انتظامیہ کی بزدلی اور کمزوری کے بغیر کسی بھی علاقے میں شراب فروخت نہیں ہو سکتی۔ وجے کمار سنہا نے کہا کہ بہار کے کسی بھی علاقے میں انتظامیہ ایماندار ہے تو وہاں شراب کیوں نہیں پکڑی جاتی؟

یہ بھی پڑھیں

بہار میں راشن کارڈ کے لیے آن لائن درخواست شروع، جلدی کریں رجسٹریشن، یہاں جانیں درخواست دینے کا طریقہ

دراصل اسمبلی اسپیکر وجے کمار سنہا کے اسمبلی حلقہ لکھی سرائے میں سرسوتی پوجا کے دوران منعقد ثقافتی پروگرام پر کافی ہنگامہ ہوا تھا۔ اس تقریب میں بار گرلز کے ڈانس کے ساتھ ساتھ کچھ لوگوں کے ہتھیار لہرانے کی ویڈیو بھی وائرل ہوئی۔ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے دو ایسے افراد کو گرفتار کر لیا جن کا اس واقعے سے کوئی تعلق نہیں تھا۔ دونوں ثقافتی پروگرام دیکھنے آئے تھے۔ سپیکر اسمبلی نے پولیس کی اس کارروائی پر سوال اٹھائے۔

ان خبروں کو بھی پڑھیں

سورس : آج تک

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button