Life Styleتازہ ترینطب صحت

رات کو اس طرح ناف پر لگائیں گے یہ تیل، تو حاصل ہوں گے یہ 4 حیرت انگیز فوائد ، جان کر ہو جائیں گے حیران

سب جانتے ہیں کہ ناف پر تیل ڈالنا جسم کے لیے انتہائی فائدہ مند ہے۔ اگر آپ صحیح طریقے سے اور وقت پر ناف میں تل کا تیل لگائیں تو اس کے فوائد جان کر آپ حیران رہ جائیں گے۔

آئیے آپ کو بتاتے ہیں وہ فوائد :

آیوروید کے مطابق ناف پر تل کا تیل لگانے سے آپ جوڑوں کے درد سے کافی حد تک آرام حاصل کر سکتے ہیں۔

جوڑوں کے درد کو دور کرنے میں تل کا تیل کارآمد ہے۔

انفیکشن سے بچنے کے لیے ہر رات ناف پر تل کا تیل لگا کر سو جائیں۔

تل کا تیل لگانے سے زکام اور فلو میں کافی حد تک آرام ملتا ہے۔

ناف پر تل کا تیل لگانا : یہ تو سب کو معلوم ہے کہ بچپن سے دادی اور نانیاں ہماری ناف پر تیل لگاتی رہی ہیں۔دراصل بوڑھے، بزرگ پہلے سے ہی جانتے ہیں کہ ناف پر تیل لگانے کے کتنے فائدے ہیں۔اسی لیے بچپن میں بچے کی مالش کرتے وقت اس کی ناف میں تیل ضرور لگایا جاتا ہے۔ اس کے ساتھ ہی آیوروید میں کئی چھوٹی بڑی پریشانیوں کو دور کرنے کے لیے ناف پر تیل لگانے کا مشورہ دیا گیا ہے۔

اسے کئی جگہوں پر آیوروید میں بیلی بٹن تھراپی بھی کہا جاتا ہے۔

سچ تو یہ ہے کہ ناف کو طاقت کا مرکز سمجھا جاتا ہے۔ کہا جاتا ہے کہ اس کی وجہ سے ہمارے جسم کے کئی اعصاب ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں۔ اس لیے ناف پر تیل ڈالنے سے جسمانی اور ذہنی دونوں طرح کے مسائل میں آرام ملتا ہے۔

کچھ لوگ ناف پر سرسوں کا تیل لگانا پسند کرتے ہیں کچھ گھی اور کچھ لوگ ناریل کا تیل جیسا کہ ان کے گھر کے بڑوں نے کیا ہے۔

لیکن آج ہم آپ کو ناف پر تل کا تیل لگانے کے ایسے فائدے بتائیں گے جنہیں جان کر آپ حیران رہ جائیں گے۔

ناف پر تل کا تیل لگانے کے فائدے

یہ سچ ہے کہ آیوروید میں تل کے تیل کو بہترین سمجھا جاتا ہے۔ تل کا تیل کئی طرح کے صحت کے مسائل کو دور کرنے میں بہت موثر ہے۔ آیوروید کے مطابق تل کے تیل کا اثر بہت گرم ہوتا ہے۔نزلہ زکام اور جوڑوں کے درد کو دور کرنے میں بہت فائدہ مند ہے۔اگر آپ اس کا صحیح استعمال کریں تو آپ بہت سے دردوں سے بہت جلد آرام حاصل کر سکتے ہیں۔

جوڑوں کے درد میں ملے گا آرام

سردیوں میں اکثر لوگ جوڑوں کے درد کے مسئلے سے پریشان رہتے ہیں۔ جوڑوں میں درد کی وجہ سے ہماری روزمرہ کی سرگرمیاں متاثر ہونے لگتی ہیں۔ مثال کے طور پر کھڑے ہونے، بیٹھنے، چلنے اور جھکنے سے قاصر ہیں۔ ایسی حالت میں اگر آپ ناف پر تل کا تیل لگائیں تو جوڑوں کے درد کے مسئلے پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ آیوروید میں بتایا گیا ہے کہ تل کے تیل کو ناف پر لگانے سے جوڑوں کے درد میں کافی حد تک آرام مل سکتا ہے۔

انفیکشن کو ختم کرتا ہے

بہت سے لوگ ایسے ہیں جو ہمیشہ ناف صاف کرنا بھول جاتے ہیں۔ ایسی حالت میں ناف پر گندگی، اور کئی طرح کے بیکٹیریا جمع ہونے لگتے ہیں۔ اس کی وجہ سے ناف پر انفیکشن کا خطرہ بھی کافی حد تک بڑھ جاتا ہے۔ ایسی حالت میں انفیکشن سے بچنے کے لیے آپ ہر رات ناف پر تل کا تیل لگا کر سو جائیں۔ اس سے ناف میں جمع ہونے والی گندگی آہستہ آہستہ باہر نکلے گی اور انفیکشن سے بھی کافی حد تک محفوظ رہے گا۔

درحقیقت ناف ایک ایسا مرکزی نقطہ ہے جس سے جسم کے کئی اعصاب جڑے ہوئے ہیں۔ ایسے میں روزانہ ناف پر تل کا تیل لگانے سے نزلہ، زکام یا کھانسی کے مسئلے پر بھی کافی حد تک قابو پایا جا سکتا ہے۔ تل کا تیل گرم کرنے کا اثر رکھتا ہے، یہ نزلہ زکام میں بہت آرام دیتا ہے۔

ناف پر تل کا تیل لگانے کا یہ ہے صحیح وقت اور طریقہ

تل کا تیل فطرتاً گرم ہوتا ہے اس لیے سردیوں میں اس تیل سے ناف کی مالش کرنا بہت فائدہ مند ہے۔

رات کو ناف پر تیل لگانا بھی زیادہ فائدہ مند سمجھا جاتا ہے۔ ایسا کرنے سے رات بھر ناف پر تیل رہتا ہے جس کی وجہ سے ناف تیل کو اچھی طرح جذب کر لیتی ہے۔ اس کے لیے ناف پر تل کے تیل کے 3-4 قطرے ڈالیں۔روزانہ ایسا کرنے سے آپ کو کافی حد تک فائدہ ہوگا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button