بہاربیگوسراے

بیگوسرائے کے راکیش بائیو فلوک ٹیکنالوجی سے کر رہے فش فارمنگ، لاگت سے ہو رہی ہے کمائی دگنی ، جانیے مکمل تفصیلات

18 لاکھ کی لاگت سے بنوایا گیا ٹینک : نریش کی طرف سے بتایا گیا کہ اگست 2021 میں اس نے اپنے دروازے پر 18 لاکھ کی لاگت سے 9 بائیو فلوک مصنوعی ٹیروپولین ٹینک بنائے۔ معلومات کی کمی کی وجہ سے ابتدائی دنوں میں بہت محنت کرنی پڑی۔ مچھلی کے بیج خریدنے میں غلطی ہوئی، اس سے بہت مشکل کا سامنا کرنا پڑا ۔

بیگوسرائے کے گھاگھرا پنچایت کے چھوٹے سے قصبے کارکولی میں نئی ٹیکنالوجی کے ساتھ مچھلی کی کھیتی کی جا رہی ہے۔ یہ بائیو فلوک اور انڈونیشیا کی ٹیکنالوجی ہے، اس کا استعمال کرتے ہوئے نریش مہتو اپنی زندگی کو سنوارنے میں لگے ہوئے ہیں۔ ان کے بنائے ہوئے مصنوعی تالاب میں بہت سی انواع کے ساتھ ساتھ مقامی مانگور مچھلی کی ناپید انواع بھی آسانی سے دیکھی جا سکتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

نریش نے بتایا کہ کشن گنج سے الیکٹرک ٹریڈ میں ڈپلومہ کرنے کے بعد اس نے تقریباً سات سال تک پاور ہاؤس بکھری میں کام کیا۔ اسی وقت اس نے یوٹیوب پر مچھلی کاشت کرنے کی یہ ترکیب دیکھی۔ اس کے بعد نوکری چھوڑ کر اس کاروبار میں لگ گیا۔ پھر مظفر پور کے سنٹرل فشریز ریسرچ سنٹر سے چھ دن کی تربیت حاصل کی اور اس میں لگ گئے۔

5 قسم کی مچھلی پالن سے دوگنی آمدنی حاصل کر رہے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ 23/23 فٹ کے ٹینک میں پانچ اقسام کی مچھلیاں رکھی جارہی ہیں۔ اس میں فنگاس ، آندھرا، تلاپیا ، کبائی اور دیسی مانگور شامل ہیں۔

ایک ٹینک میں تقریباً 9 کونٹل مچھلیاں پالی جا سکتی ہیں۔ مچھلی کی خوراک، پانی، آکسیجن، مزدور کی جرت وغیرہ پر تقریباً 40 ہزار روپے خرچ ہوتے ہیں۔

چھ ماہ میں 200-700 گرام مچھلی فروخت کے لیے تیار ہو جاتی ہے۔ اس کا بازار بھی یہاں آسانی سے دستیاب ہے۔ لوگ ان مچھلیوں کو بڑی تعداد میں گاہکوں کے پاس لے جاتے ہیں۔ اس نے پہلی بار تقریباً ایک لاکھ 20 ہزار روپے کمائے۔ اس طرح چھ ماہ کا منافع لاگت سے دوگنا ہے۔

فش فارمنگ کی بائیو فلوک تکنیک کیا ہے؟

اس آئیڈیا کے بارے میں معلومات دیتے ہوئے نریش نے بتایا کہ کسان تالاب کی کھدائی کے بغیر مصنوعی ٹینک میں مچھلی پال سکتے ہیں۔ یہ نظام Biofloc بیکٹیریا استعمال کرتا ہے۔ یہ بیکٹیریا مچھلی کے فضلے اور فضلے کی خوراک کو پروٹین سیلز میں تبدیل کرتے ہیں۔ یہ پروٹین سیل مچھلیوں کی خوراک کے طور پر کام کرتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

گھر بیٹھے آدھار کارڈ میں اپنا موبائل نمبر یا نام، پتہ تبدیل کریں، جانیں یہ آسان طریقہ

आरबीआई ने पेटीएम पेमेंट्स बैंक को नए खाते खोलने से रोककर झटका दिया।

نریش نے بتایا کہ سردی کے موسم میں درجہ حرارت کو برقرار رکھنا ایک بڑا چیلنج ہے۔ ٹینک کے پانی میں امونیم الکلائنٹی، پی ایچ اور ٹی ڈی ایس کو چار سے پانچ دنوں میں برقرار رکھنا ہوگا۔ ہر ہفتے %20 پانی کو ٹینک سے نکال کر تازہ پانی ڈالنا پڑتا ہے۔

مچھلیاں سردیوں میں کم اور گرمیوں میں زیادہ بڑھتی ہیں

یہاں مچھلی کی فارمنگ کے لیے جدید ترین تکنیک کے ساتھ آکسیجن کی فراہمی کی جاتی ہے۔ اس کے علاوہ فرم میں 24 گھنٹے بجلی کی دستیابی کے لیے سولر لائٹس، انورٹرز، جنریٹر اور بجلی کے کنکشن بنائے گئے ہیں۔ تاکہ ماحول کو ہمیشہ فش فارمنگ کے مطابق رکھا جا سکے۔

قومی ترجمان کا ٹیلیگرام گروپ جوائن کرنے کے لیے یہاں کلک کریں!

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button