Featuredاتر پردیش

اپرنا یادو ہوئی بی جے پی میں شامل، ملائم کی چھوٹی بہو کا اکھلیش کو بڑا جھٹکا

  • ملائم کی چھوٹی بہو کا اکھلیش یادو کو بڑا جھٹکا
  • ملائم سنگھ یادو کی بہو اپرنا یادو نے آج یوپی کے نائب وزیر اعلی کیشو پرساد موریہ اور بی جے پی کے ریاستی صدر سواتنتر دیو سنگھ کی موجودگی میں بی جے پی میں شمولیت اختیار ک

اتر پردیش : 19 جنوری (قومی ترجمان /ایجنسیاں) اترپردیش میں اسمبلی انتخابات سے پہلے یوپی کی سیاست میں بڑی ہلچل مچ گئی ہے۔ ملائم سنگھ یادو کی چھوٹی بہو اپرنا یادو آج بی جے پی میں شامل ہو گئیں۔ اپرنا یادو کے انٹری سے نہ صرف بی جے پی ایس پی میں پھوٹ پڑی ہے بلکہ ملائم سنگھ یادو کی چھوٹی بہو نے ایس پی سربراہ اکھلیش یادو کو بڑا جھٹکا دیا ہے۔ 2022 کے یوپی اسمبلی انتخابات سے پہلے بی جے پی میں شامل ہونے کے بعد اپرنا یادو نے کہا کہ میں بی جے پی کی بہت شکر گزار ہوں۔ میرے لیے ملک ہمیشہ پہلے آتا ہے۔ میں پی ایم مودی کے کام کی تعریف کرتی ہوں۔

دراصل اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی ملائم سنگھ یادو کی بہو اپرنا یادو نے آج یوپی کے نائب وزیر اعلی کیشو پرساد موریہ اور بی جے پی کے ریاستی صدر سواتنتر دیو سنگھ کی موجودگی میں بی جے پی میں شمولیت اختیار کی۔ بتادیں کہ ملائم سنگھ یادو کے بیٹے پرتیک کی بیوی اپرنا یادو 2017 میں لکھنؤ کینٹ اسمبلی سے ایس پی پارٹی کے ٹکٹ پر الیکشن ہار چکی ہیں۔

بی جے پی میں شامل ہونے کے بعد اپرنا یادو نے کہا کہ میں وزیر اعظم مودی جی اور قومی صدر جی کا شکریہ ادا کرتی ہوں۔ میں اتر پردیش بی جے پی کے صدر سواتنتر دیو سنگھ، نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ اور انل بلونی جی کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ میں پہلے ہی وزیراعظم سے متاثر تھی ۔میرے لیے قوم سب سے پہلے ہے۔ اب قوم کی عبادت کے لیے نکلی ہوں ۔ آپ کا تعاون لازمی ہے۔ میں کہوں گی کہ میں جو کچھ بھی کر سکتا ہوں میں اپنی بہترین صلاحیت کے مطابق کروں گا۔

اتر پردیش میں 2022 کے اسمبلی انتخابات کی تاریخ جاری ہوتے ہی لیڈروں نے رخ بدلنا شروع کر دیا ہے۔سوامی پرساد موریہ، دھرم سنگھ سینی جیسے سینئر لیڈر جو یوگی آدتیہ ناتھ حکومت میں وزیر تھے سماج وادی پارٹی میں شامل ہو گئے ہیں۔ اس کے علاوہ بی جے پی کے کئی ایم ایل اے بھی ایس پی میں شامل ہو چکے ہیں۔ دوسری چھوٹی پارٹیوں کے بااثر رہنما بھی رخ بدلنے لگے ہیں۔

یوپی میں کب ہے ووٹنگ؟

بتا دیں کہ اتر پردیش کی 403 اسمبلی سیٹوں کے لیے سات مرحلوں میں ووٹنگ 10 فروری سے شروع ہوگی۔ اتر پردیش میں دوسرے مراحل میں پولنگ 14، 20، 23، 27 فروری، 3 اور 7 مارچ کو ہوگی۔ ساتھ ہی یوپی انتخابات کے نتائج 10 مارچ کو آئیں گے۔ 2017 کے انتخابات میں بی جے پی نے یہاں 403 میں سے 325 سیٹیں جیتی تھیں۔ ایس پی اور کانگریس نے مل کر الیکشن لڑا تھا۔ ایس پی نے 47 اور کانگریس نے 7 سیٹیں جیتیں۔ مایاوتی کی بی ایس پی 19 سیٹیں جیتنے میں کامیاب رہی۔ جبکہ 4 نشستوں پر دوسروں کا قبضہ رہا۔

ماخذ: نیوز 18

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button