ارریہ

9 سالہ بچی کی زیادتی کے بعد قتل : ارریہ میں جیتیا میلے سے شرپسندوں کیا اغوا، بغیر کپڑوں کے کھیت سے لاش ملی

ارریہ میں 9 سالہ بچی کو زیادتی کے بعد قتل کر دیا گیا۔ لڑکی کی لاش پیر کی صبح ضلع کے رانی گنج تھانہ علاقے کے ایک گاؤں سے ملی۔ اس کے جسم پر ایک کپڑا بھی نہیں تھا۔ گاؤں والوں نے عصمت دری اور قتل کا امکان ظاہر کیا ہے۔ اہل خانہ کا کہنا ہے کہ لڑکی رات گئے سے لاپتہ تھی۔

اہل خانہ نے خدشہ ظاہر کیا کہ گھر کے قریب جیتیا میلہ میں پروجیکٹر پر فلم دیکھتے ہوئے بدمعاشوں نے پہلے زیادتی کی اور پھر قتل کردیا۔

واقعہ کی اطلاع ملتے ہی رانی گنج تھانے کے انچارج کوشل کمار، ایس آئی روبی کماری، اے ایس آئی ہردی نارائن سنگھ نے جائے وقوعہ کی جانچ کی۔ پولیس نے لاش کو قبضے میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لیے ارریہ بھیج دیا ہے۔

لڑکی جیتیا میلے میں فلم دیکھنے گئی تھی۔

واقعہ کے بارے میں سینئر افسر کو آگاہ کرتے ہوئے ایس ایچ او نے تفتیش کے لیے ڈاگ سکواڈ اور ایف ایس ایل ٹیم کو طلب کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ متوفی کے لواحقین نے بتایا کہ جیتیا تہوار کے موقع پر گھر کے قریب میلہ لگا ہوا تھا۔ لڑکی اتوار کی رات میلے میں چل رہی فلم دیکھنے گئی تھی۔ رات گئے تک گھر نہ لوٹے تو ہم نے بہت تحقیق کی۔ لیکن وہ کہیں نہیں مل رہی تھی۔ صبح اس کی لاش گھر سے کچھ فاصلے پر ایک ویران مکان کے ساتھ والے کھیت کے راستے میں برہنہ پڑی تھی۔

لاش کے قریب سے لڑکی کے کپڑے ملے

لاش کے پاس سے اس کے کپڑے ملے تھے۔ جائے وقوعہ پر دو مقامات پر خون کے دھبے بھی ملے ہیں۔ اس کے بعد اہل خانہ لاش کو موقع سے اپنے گھر لے آئے۔ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی گاؤں والوں کی بڑی تعداد لاش کو دیکھنے کے لیے جمع ہو گئی۔ ساتھ ہی متوفی کی ماں سریتا کی حالت بھی خراب ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button