اہم خبریںبین ریاستی خبریںدہلیعالمی خبریں

یکم جنوری 2022 سے نئے اصول: نقد رقم نکالنے سے لے کر چپل خریدنے تک بہت سی چیزیں بدل جائیں گی، پڑھیں مکمل خبر

یکم جنوری 2022 – نقد رقم نکالنے سے لے کر چپل خریدنے تک، بہت سی چیزیں بدل جائیں گی۔  پڑھیں

اے ٹی ایم سے کیش نکالنے پر چارج میں اضافہ کیا گیا ہے۔

ریزرو بینک آف انڈیا کی جانب سے بینکوں کو نقد رقم نکالنے کے چارج میں اضافہ کرنے کی اجازت دینے کے بعد انڈیا پوسٹ پیمنٹ بینک سمیت کئی نجی بینکوں نے بھی اپنے نکالنے کے چارجز میں اضافہ کر دیا ہے جو یکم جنوری 2022 سے لاگو ہیں۔

جوتوں اور چپلوں پر جی ایس ٹی کی شرح اتنی بڑھ گئی کہ اب ان کی خریداری مہنگی ہو جائے گی۔

جنوری 2022 سے اصول میں تبدیلیاں: نیا سال آ گیا ہے اور نئے سال کے ساتھ نئی تبدیلیاں سامنے آ رہی ہیں۔ آپ کو نئے سال کے پہلے مہینے سے بہت سی تبدیلیاں دیکھنے کو ملیں گی۔ جنوری 2021 کی پہلی تاریخ سے بہت سی تبدیلیاں ہو رہی ہیں جس کا اثر براہ راست آپ کی جیب پر پڑے گا۔

سب سے بڑی بات یہ ہے کہ اے ٹی ایم سے کیش نکالنے پر چارج میں اضافہ کیا گیا ہے۔ریزرو بینک آف انڈیا کی جانب سے بینکوں کو نقد رقم نکالنے کے چارج میں اضافہ کرنے کی اجازت دینے کے بعد انڈیا پوسٹ پیمنٹ بینک سمیت کئی نجی بینکوں نے بھی اپنے نکالنے کے چارجز میں اضافہ کر دیا ہے جو یکم جنوری 2022 سے لاگو ہیں

ساتھ ہی جی ایس ٹی کے حوالے سے بھی بہت سی چیزیں بدل رہی ہیں۔  جوتوں اور چپلوں پر جی ایس ٹی کی شرح اتنی بڑھ گئی ہے کہ اب ان کی خریداری مہنگی ہو جائے گی۔

یکم جنوری 2022 سے تبدیلیاں:

آئیے ان نئی تبدیلیوں پر ایک نظر ڈالتے ہیں جن کا براہ راست اثر آپ نے جیب پر پڑے گا۔

اے ٹی ایم سے کیش نکالنا مہنگا پڑے گا۔

یکم جنوری 2022 سے صارفین کو اب مہینے کی حد سے زیادہ لین دین کرنے پر ہر لین دین پر 20 روپے کی جگہ 21 روپے ادا کرنے ہوں گے۔

تین نجی بینکوں نے بھی لین دین کے قوانین میں تبدیلی کی ہے۔

آئی سی آئی سی آئی بینک کے نئے قوانین کے مطابق پہلی پانچ ٹرانزیکشن مفت ہوں گی جبکہ اس کے بعد ہونے والی ہر ٹرانزیکشن کے لیے 21 روپے فیس وصول کی جائے گی۔ہر مالیاتی لین دین پر فیس 21 روپے ہوگی جب کہ غیر مالیاتی لین دین پر یہ فیس ہر بار 8 روپے 50 پیسے ہوگی۔

ایچ ڈی ایف سی نے شہروں کے حساب سے مختلف اصول بنائے ہیں۔  پہلی تین ٹرانزیکشن ممبئی، نئی دہلی، چنئی، کولکتہ، بنگلورو اور حیدرآباد کے لیے مفت ہیں۔ اس کے بعد مفت کی حد سے زیادہ ٹرانزیکشنز پر فی ٹرانزیکشن 21 روپے پلس ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔

ایکسس بینک Axis Bank کا اصول بھی ایسا ہی ہے۔ایکسس بینک نے مفت کی حد کے بعد رقم نکالنے پر 20 روپے پلس ٹیکس کا پروویژن رکھا ہے۔یہ فیس مالیاتی لین دین پر 5 مفت ٹرانزیکشن کی حد کے بعد لاگو ہوگی۔ غیر مالیاتی لین دین کے لیے دس روپے فیس مقرر کی گئی ہے۔

آئی پی پی بی نے چارجز میں بھی اضافہ کیا۔

انڈیا پوسٹ پیمنٹ بینک نے بھی اپنے لین دین کے قوانین کو تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ جس کے بعد اس بینک سے صرف 4 لین دین مفت کیے جا سکتے ہیں۔ چار کے بعد تمام لین دین پر فیس ادا کرنا ہوگی۔  لین دین کرنے والے شخص کو فی لین دین 25 روپے جمع کروانے پڑ سکتے ہیں۔

چپل خریدنا ہوا مہنگا

سب سے پہلے یکم جنوری سے جوتے کی صنعت پر جی ایس ٹی کی شرحوں میں اضافہ کیا گیا ہے۔ ٹیکسٹائل انڈسٹری پر بھی نرخ پانچ فیصد سے بڑھا کر 12 فیصد کر دیے گئے تھے لیکن احتجاج کے باعث جمعہ کو جی ایس ٹی کونسل میں یہ اضافہ موخر کر دیا گیا۔  تاہم جوتے کی صنعت پر جی ایس ٹی کی شرح پانچ فیصد سے بڑھا کر 12 فیصد کر دی گئی ہے۔ ایسے میں جوتے اور چپل خریدنا مہنگا ہو جائے گا ۔

جی ایس ٹی کونسل نے اعلان کیا ہے کہ جو تاجر اپنا ماہانہ جی ایس ٹی ریٹرن یا سمری ریٹرن فائل نہیں کرتے ہیں انہیں یکم جنوری 2022 سے جی ایس ٹی آر-1 سیلز ریٹرن فائل کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

بینک لاکر سے متعلق قوانین سخت ہو گئے۔

اس سال اگست میں ریزرو بینک نے بینک لاکرس سے متعلق قوانین کو سخت کر دیا تھا۔  نئے رہنما خطوط کے تحت، آگ، چوری، عمارت گرنے اور بینک ملازمین کی جانب سے دھوکہ دہی کی صورت میں لاکر کے لیے بینک کی ذمہ داری اس کے سالانہ کرایے کے 100 گنا تک محدود ہو جائے گی۔  لاکرز سے متعلق نظرثانی شدہ رہنما خطوط یکم جنوری 2022 سے نافذ العمل ہیں۔

بینکوں کو لاکر کے معاہدے میں ایک شق شامل کرنا ہوگی جس کے تحت لاکر کرایہ پر لینے والا شخص اس میں کوئی غیر قانونی یا خطرناک سامان نہیں رکھ سکے گا۔

ایل پی جی سلنڈر کی قیمتوں میں ردوبدل کیا جائے گا۔

ملک میں کھانا پکانے اور کمرشل ایل پی جی سلنڈروں کی قیمتوں میں ہر مہینے کے شروع میں نظر ثانی کی جاتی ہے۔گزشتہ ماہ گھریلو کھانا پکانے کے گیس سلنڈر کی قیمتیں برقرار رکھی گئی تھیں تاہم کمرشل سلنڈر کی قیمت میں 100.50 روپے فی سلنڈر کا اضافہ ہوا تھا۔اس بار یہ بھی دیکھنا ہوگا کہ گیس سلنڈر کی قیمتوں میں کیا ردوبدل ہوتا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button