Featuredبہار

مظفر پور سمیت چھ اضلاع میں کولڈ ڈے، تین دنوں تک ستائے گا مزید یہ موسم

  • مظفر پور سمیت چھ اضلاع میں کولڈ ڈے، تین دنوں تک ستائے گا مزید یہ موسم
  • ریاست بھر میں اوسطاً کم از کم درجہ حرارت 6 سے 8 ڈگری سیلسیس کے درمیان اور اوسطاً زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 16 سے 18 ڈگری سیلسیس کے درمیان رہتا ہے۔
  • محکمہ موسمیات کے اندازوں کے مطابق اگلے دو دن یعنی جمعرات تک رات کو شدید سردی رہے گی۔ دوسری جانب بدھ سے ہی موسم میں بہتری کا امکان ہے۔

بہار : 19 جنوری (قومی ترجمان) مظفر پور سمیت ریاست میں شدید سردی جاری ہے۔ شمال مغربی اور شمالی ہواؤں کے اثر کی وجہ سے ریاست بھر میں زندگی کنکنی سے دوچار ہے۔ منگل کو ریاست کے 20 اضلاع میں کم از کم درجہ حرارت 10 ڈگری سیلسیس سے نیچے گر گیا۔ نصف درجن اضلاع میں موسم یومِ سرما رہا ۔

دھند نے پوری ریاست کو اپنی لپیٹ میں لے لیا جس سے معمولات زندگی متاثر رہی۔ ریاست بھر میں اوسطاً کم از کم درجہ حرارت 6 سے 8 ڈگری سیلسیس کے درمیان اور اوسطاً زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 16 سے 18 ڈگری سیلسیس کے درمیان رہتا ہے۔ جس کی وجہ سے پوری ریاست میں سرد دن جیسی صورتحال ہے۔ منگل کو مظفر پور کے علاوہ پٹنہ، دربھنگہ، مشرقی چمپارن، گیا اور سارن میں شدید سردی کا دن رہا۔ پٹنہ، گیا، بھاگلپور، مظفر پور، چھپرا، دربھنگہ، مشرقی چمپارن، شیخ پورہ، بکسر، سیتامڑھی، اورنگ آباد، بیگوسرائے، بانکا ، نوادہ میں کم سے کم درجہ حرارت 10 ڈگری سیلسیس سے نیچے رہا۔ نالندہ کے ہرناوٹ، سیوان کے جیرادیئ اور سمستی پور کے پوسا میں بھی درجہ حرارت دس سے نیچے رہا۔ محکمہ موسمیات کے مطابق سطح سمندر سے 0.9 کلومیٹر بلندی پر شمال مغربی اور شمال سے ہوا کا بہاؤ ہے۔ ان ہواؤں کے بہاؤ کی وجہ سے ریاست بھر میں کنکنی کی صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔اگلے دو تین دنوں میں ریاست کے مغربی اور جنوبی وسطی حصوں کے کچھ حصوں میں سرد دن کے حالات پیدا ہونے کا قوی امکان ہے۔

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران دارالحکومت سمیت ریاست بھر میں موسم دھند بھرا رہا۔ ریاست کے بیشتر حصوں کو گھنی دھند نے ڈھک لیا۔ گیا کا پارہ سب سے کم رہا۔ گیا میں کم سے کم درجہ حرارت 5.1 ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیا۔ دارالحکومت پٹنہ میں کم سے کم درجہ حرارت 8.4 ڈگری سیلسیس رہا۔ ایک روز قبل کم سے کم درجہ حرارت 8.2 ڈگری تھا۔


شمالی بہار سمیت کوسی مشرقی بہار اور سیمانچل کے اضلاع میں شدید سردی جاری ہے۔ مغربی ہوا کی وجہ سے لوگ دن کے وقت بھی گھروں کے اندر ہی رہے۔ شام ہوتے ہی سڑکیں سنسان ہو گئیں۔ گیا ریاست میں منگل کو سب سے زیادہ سردی۔کم سے کم پارہ 5.1 ڈگری سیلسیس تک گر گیا۔ منگل کو پٹنہ کے علاوہ دربھنگہ، مشرقی چمپارن، مظفر پور، گیا اور سارن میں سردی کا دن رہا۔ پٹنہ، گیا، بھاگلپور، مظفر پور، چھپرا، دربھنگہ، مشرقی چمپارن، شیخ پورہ، بکسر، سیتامڑھی، اورنگ آباد، بیگوسرائے، بانکا ، نوادہ میں کم سے کم درجہ حرارت 10 ڈگری سیلسیس سے نیچے رہا۔


ہندوستانی محکمہ موسمیات کے اندازوں کے مطابق اگلے دو دن یعنی جمعرات تک رات کو شدید سردی رہے گی۔ دوسری جانب بدھ سے ہی موسم میں بہتری کا امکان ہے۔اوس اور ہلکی دھند کے باعث فضا میں نمی کی سطح 95 فیصد کے قریب ہے۔


یہاں شمالی بہار کے اضلاع میں شدید سردی جاری ہے۔ بیتیا کی مصروف سڑکوں پر سردی کی وجہ سے دن میں بھی خاموشی چھائی رہی۔ مشرقی چمپارن میں دکانیں کھلی لیکن صرف چند گاہک نظر آئے۔ ہسپتالوں کی او پی ڈیز میں بھی مریضوں کی تعداد کم ہو گئی ہے۔ مدھوبنی میں ریلوے ٹکٹ کاؤنٹر پر قطار کے بجائے دو چار لوگ نظر آئے۔ بازار میں بھی خاموشی تھی۔سمستی پور میں کورونا ویکسینیشن پر بھی سردی کا اثر نظر آیا۔ دربھنگہ کے ڈی ایم سی ایچ میں باہر سے آنے والے مریضوں کی تعداد میں نمایاں کمی آئی ہے۔ سیتامڑھی کے ملحقہ نیپال میں سردی کے حالات مزید خوفناک ہو گئے ہیں۔ یہاں راجندر زرعی یونیورسٹی پوسا کے محکمہ موسمیات نے امکان ظاہر کیا ہے کہ بارش ہلکی سی درمیانے درجے کی ہوسکتی ہے۔


محکمہ موسمیات کے مطابق منگل کو ریاست میں سرد ترین دن رہا۔ کم از کم درجہ حرارت 5.1 گیا کے بعد چھپرا میں درجہ حرارت 6.4 ڈگری رہا۔ اسی طرح پٹنہ کا کم از کم درجہ حرارت 8.4، مظفر پور 9.1، بھاگلپور کا 9.5 ڈگری سیلسیس رہا۔


ماہر موسمیات ایس کے پٹیل نے کہا کہ مسلسل دوسرے دن زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت معمول سے پانچ ڈگری زیادہ اور کم سے کم درجہ حرارت 10 ڈگری سے کم رہا۔گیا میں یہ سرد دن تھا۔ بدھ کو بھی ایسا ہی سرد موسم متوقع ہے۔ نے بتایا کہ ویسٹرن ڈسٹربنس کے اثر کی وجہ سے 22 جنوری کی شام یا 23 کی صبح سے بادل چھا سکتے ہیں۔

ماخذ: ہندوستان

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button