اہم خبریںعالمی خبریں

روسی خلائی ایجنسی کے سربراہ نے امریکا کو دھمکی دیدی، کہا – بھارت پر خلائی اسٹیشن گرانے کا ہے آپشن

ماسکو: یوکرین پر روس کا حملہ جاری ہے۔ ادھر امریکی صدر جو بائیڈن نے کہا ہے کہ اگر ان کے روسی ہم منصب ولادی میر پوتن کو اب نہ روکا گیا تو ان کی حوصلہ بڑھے گا ۔ جو بائیڈن نے کہا ہے کہ اگر روسی صدر ولادی میر پوتن نارتھ اٹلانٹک ٹریٹی آرگنائزیشن کے ممالک میں داخل ہوئے تو امریکا مداخلت کرے گا۔

اس کے بعد روس کی خلائی ایجنسی روسکوموس کے سربراہ دمتری روگوزین نے پلٹ وار کرتے ہوئے سخت جواب دیا ہے ۔روگوزین نے خبردار کیا ہے کہ اگر واشنگٹن تعاون بند کر دے تو بین الاقوامی خلائی سٹیشن کو بے قابو ہونے سے کون بچائے گا؟

روس کی خلائی ایجنسی کے سربراہ نے خبردار کیا۔

معلومات کے مطابق روس کی خلائی ایجنسی روسکوموس کے سربراہ دمتری روگوزین نے امریکہ کے فیصلے کے بعد ٹویٹ کرتے ہوئے خبردار کیا۔ انہوں نے کہا کہ ‘اگر آپ ہمارے ساتھ تعاون بند کر دیں گے تو آئی ایس ایس کو بے قابو ہو کر گردش کرنے اور امریکہ یا یورپ میں گرنے سے کون بچائے گا؟’ روگوزین نے ایک ٹویٹ تھریڈ میں دھمکی آمیز لہجے میں کہا- ‘روس کے پاس بھارت اور چین کے لیے 500 ٹن کے ڈھانچے کو چھوڑنے کا آپشن بھی موجود ہے ۔

‘کیا امریکہ خطرہ مول لینے کے لیے تیار ہے؟’

روگوزین نے کہا کہ آئی ایس ایس روس کے اوپر سے نہیں اڑتی اس لیے تمام خطرات آپ کے ہاتھ میں ہیں۔ کیا آپ ان کے لیے تیار ہیں؟ ورنہ ہم مل کر کام نہیں کریں گے اور اپنا اسٹیشن بنائیں گے۔

بائیڈن نے یہ بیان دیا۔

وائٹ ہاؤس میں ایک پریس کانفرنس میں جو بائیڈن نے کہا، ‘اگر وہ (پوتن ) نیٹو ممالک میں داخل ہوتے ہیں تو ہم مداخلت کریں گے۔ مجھے صرف ایک بات کا یقین ہے کہ اگر ہم نے انہیں ابھی نہیں روکا تو ان کی حوصلہ افزائی ہوگی ۔ اگر ہم نے اب ان کے خلاف سخت پابندیاں عائد نہیں کیں تو ان کا حوصلہ مزید بڑھے گا ۔بائیڈن نے اس عرصے میں روس کے خلاف کئی بڑی پابندیاں عائد کرنے کا اعلان بھی کیا۔

ان خبروں کو بھی پڑھیں

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button