Featuredاہم خبریںبہارتعلیم و روزگار

بہار بورڈ نے 10ویں اور 12ویں کے امتحانات کے لیے جاری کی ہدایات، تمام امتحانی مراکز پر نافذ ہوگی دفعہ 144

  • 25 امتحان دینے والوں کے لیے ایک انویجیلیٹر دستیاب ہوگا۔ ایک کلاس میں کم از کم دو نگہبان ہوں گے
  • انٹر امتحان میں مشاہداتی کام کرنے والے اساتذہ کی تقرری کے لیے قرعہ اندازی کی جائے گی۔

بہار ،24 جنوری (قومی ترجمان) دسویں اور بارہویں امتحان کے کے لیے بورڈ نے ضروری ہدایات جاری کردی ہیں۔اسسٹنٹ سینٹرل سپرنٹنڈنٹ ہر شفٹ میں منعقدہ امتحان میں شریک ہوئے 25 فیصد امیدواروں کی شناخت امتحانی مرکز میں ان کے ایڈمٹ کارڈ، جوابی شیٹ اور OMR پر چھپی ہوئی تصویر سے کریں گے۔

تفتیش کار جاری ہدایات کے مطابق سوالیہ پرچہ تقسیم کرے گا۔ 25 امتحان دینے والوں کے لیے ایک انویجیلیٹر دستیاب ہوگا۔ ایک کلاس میں کم از کم دو نگہبان ہوں گے۔ انٹر امتحان میں مشاہداتی کام کرنے والے اساتذہ کی تقرری کے لیے قرعہ اندازی کی جائے گی۔ اس کے لیے بہار بورڈ نے اساتذہ کی فہرست ہر ضلعی تعلیمی دفتر کو بھیجی ہے۔ 28 جنوری تک انسپکٹرز کا تقرر کیا جانا ہے۔

پٹنہ ڈی ای او آفس کی مانیں تو 25 جنوری کو رینڈم انسپکٹرز کی تقرری کی جائے گی۔ تقرری کے خطوط آن لائن اور آف لائن دونوں نگرانی کرنے والوں کو دستیاب کرائے جائیں گے۔ اگر انٹر اور میٹرک کے امتحانات میں امتحانی مرکز میں کوئی کوتاہی ہوئی تو اس کے ذمہ دار مرکزی سپرنٹنڈنٹ اور مجسٹریٹ ہوں گے۔ اور ان پر بہار بورڈ کی طرف سے کارروائی کی جائے گی۔ یہ معلومات بہار بورڈ نے گائیڈ میں دی ہے۔ بہار بورڈ نے انٹر اور میٹرک امتحان کے لیے گائیڈ جاری کیا ہے۔ اس میں امتحان کے لیے تمام احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایات دی گئی ہیں۔ اس دوران طلباء سے مراکز پر بدعنوانی سے پاک امتحان کرانے کی اپیل کی جائے گی۔ اس کے لیے پرچی امتحانی مرکز کے داخلی دروازے پر چسپاں کی جائے گی۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ بدعنوانی سے پاک امتحان کے لیے تمام مراکز پر دفعہ 144 نافذ کی جائے گی۔ کوتاہی کی صورت میں امتحان میں تعاون کرنے والے والدین کے ساتھ ساتھ امتحانی نظام میں شامل تمام عملے کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ بڑے پیمانے پر بددیانتی کی صورت میں اس سنٹر کا امتحان منسوخ کر دیا جائے گا۔ امتحان کے آغاز کے دوران کسی امیدوار کو مرکز سے باہر جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ صرف امتحانی مرکز کے اندر بیت الخلاء تک رسائی کی اجازت ہوگی۔

امتحان شروع ہونے سے پہلے، خفیہ سوالیہ پرچے سے متعلق بیان کی ایک کاپی کمیٹی کی طرف سے مرکزی سپرنٹنڈنٹ کو فراہم کی جاتی ہے، جس میں سوالیہ پرچوں کی تعداد امتحان دینے والوں کی تعداد کے مطابق مضمون کے لحاظ سے درج کی جاتی ہے۔ اس بنیاد پر، رول شیٹ میں درج امیدواروں کی تفصیلات کے مطابق، ہر مضمون کے لیے شفٹ وائز امتحان شروع ہونے سے پہلے ضرور کی جانی چاہیے۔ اگر سوالیہ پرچہ کی کمی ہے تو ایسی صورت میں وہ ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر یا ڈسٹرکٹ آفیسر سے رابطہ کریں گے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button