اہم خبریںبین ریاستی خبریںدہلی

بھارت کو بھارت رہنا ہے تو ہندو کو ہندو ہی رہنا پڑے گا ‘ آر ایس ایس سربراہ بھاگوت کا بیان

آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھاگوت نے ہفتہ کو مدھیہ پردیش کے گوالیار میں ایک پروگرام سے خطاب کیا۔ راشٹریہ سویم سیوک سنگھ کے سربراہ موہن بھاگوت نے اس پروگرام میں ہندوؤں کے متحد رہنے اور ہندوتوا کے بارے میں بہت سی باتیں کہیں ۔موہن بھاگوت نے کہا، آپ دیکھیں گے کہ ہندوؤں کی تعداد کم ہوئی ہے۔ ہندوؤں کی طاقت کم ہو گئی ہے۔ ہندوتوا میں کمی آئی ہے۔ اگر ہندو کو ہندو رہنا ہے تو بھارت کو متحد رہنا ہی ہوگا ۔ اگر ہندوستان کو ہندوستان رہنا ہے تو ہندو کو ہندو ہی رہنا پڑے گا۔

آر ایس ایس سربراہ نے پاک بھارت تقسیم کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ہندوؤں کے بغیر ہندوستان نہیں ہے، ہندوستان کے بغیر کوئی ہندو نہیں ہوگا، ہندوستان ہندوستان ہے، ہندوستان اور ہندو الگ نہیں ہوسکتے۔ یہاں تک کہ ہندو راشٹر کا نام لیے بغیر انہوں نے صاف صاف کہہ دیا کہ اگر ہندوستان کو ہندوستان رہنا ہے تو ہندوستان کو ہندو ہی رہنا ہوگا، اگر ہندو کو ہندو رہنا ہے تو ہندوستان کو متحد اور متحد رہنا ہوگا۔ ہندو معاشرہ انسانوں سے بنا ہے، انسانوں کا خیال رکھنا ہے، دیکھو ہندوستان نہیں تو ہم بھی نہیں ہوں گے۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ کسی کو بھی دیکھو جو اکھنڈ بھارت میں آج نہیں ہے۔

انہوں نے اشارے میں مذہبی آبادی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ دیکھیں آپ کے ملک میں سماجی اور معاشی عدم استحکام کہاں ہے؟ کہاں کہاں ملکی سالمیت اور اتحاد کو خطرہ ہے ؟کہاں سماجی اور معاشی مسائل شدید ہیں۔ آپ دیکھیں گے کہ ہندوؤں کی تعداد اور طاقت کم ہوئی ہے یا ہندوتوا کا جذبہ کم ہوا ہے

یہ باتیں سنگھ سے وابستہ روزنامہ سودیش کے 50 سال مکمل ہونے پر منعقدہ گولڈن جوبلی تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے کہیں۔ مدھیہ پردیش کے وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان نے بھی پروگرام سے خطاب کیا۔ بھاگوت اتوار کی شام استاد امجد علی خان کی آبائی رہائش گاہ پر اپنے والد کی یاد میں بنائے گئے استاد حافظ علی خان اسمرتی سرود گھر جا سکتے ہیں۔ اس دوران امجد علی خان کے اہل خانہ کے موجود ہونے کا امکان ہے۔

غور طلب ہے کہ راشٹریہ سویم سیوک سنگھ کے سرسنگھ چالک موہن بھاگوت جمعہ کو مدھیہ پردیش کے گوالیار شہر پہنچے تھے۔ بھاگوت یہاں چار روزہ ‘گھوش شیویر’ میں شرکت کر رہے ہیں۔ سنگھ کے وسطی ہندوستان صوبے کے سنگھ چالک اشوک پانڈے نے بتایا کہ یہ چار روزہ صوبائی سوار سادھک سنگم (گھوش شیویر) 25 نومبر کو سرسوتی شیشو مندر کیداردھام کمپلیکس، گوالیار میں شروع ہوا ہے۔

موہن بھاگوت ماضی میں ہندوستان، ہندوتوا اور ہندو مذہب کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کرتے رہے ہیں۔ اس حوالے سے اپوزیشن جماعتوں اور دانشوروں کی جانب سے ملا جلا ردعمل سامنے آیا ہے۔ تاہم اے آئی ایم آئی ایم لیڈر اسد الدین اویسی ہندوتوا کے بارے میں ان کے بیانات پر سخت تنقید کرتے رہے ہیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button