اہم خبریںبہارجرائم و حادثاتمغربی چمپارن

گھر میں گھسے عاشق کو پولیس کی گئی اپنے ساتھ ، اگلی صبح پھندے سے لٹکی ہوئی ملی لڑکی کی لاش

  • لڑکی کے والد ثناء اللہ نے گھر میں گھس کر عاشق پر لڑکی سے بدفعلی کا الزام لگایا۔
  • اس کے بعد پولیس نے POCSO ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کر کے ملزم کو جیل بھیج دیا۔

مغربی چمپارن ۔ Valentine Week کے دوران لڑکی کے گھر والوں نے دن کے وقت پکڑے گئے عاشق کو دن بھر مارا – پیٹا، اور شام کو پولیس کے حوالے کر دیا۔ اس لڑکے کے خلاف پوکسو ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرنے کے بعد پولیس نے اسے جیل بھیج دیا۔ اس کے بعد دیر رات لڑکی نے خودکشی کر لی۔

یہ بھی پڑھیں

آدھار کارڈ فرنچائز: مفت میں آدھار سینٹر کی فرنچائز لے کر بڑی رقم کمائیں! یہ ہے طریقہ

یہ خبر بہار کے بیتیا سے آئی ہے۔ نرکٹیا گنج کے شکارپور تھانہ علاقے میں ایک گاؤں ہے رکھہی۔ یہاں بدھ کے روز اس کا عاشق اپنے معشوقہ سے ملنے اس کے گھر پہنچا۔ گھر والوں کی نظر اس عاشق پر پڑ گئی ۔ انہوں نے اسے پکڑ کر مارا پیٹا۔ گھر والوں نے نہ صرف لڑکے کی پٹائی کی بلکہ لڑکی کی پٹائی بھی کر دی ۔ بعد ازاں شام کو اطلاع ملنے پر پولیس عاشق کو وہاں سے آزاد کرا کر تھانہ لے آئی۔

اس معاملے میں لڑکی کے والد ثناء اللہ نے گھر میں گھس کر عاشق پر لڑکی سے بدفعلی کا الزام لگایا۔ اس کے بعد پولیس نے POCSO ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کر کے ملزم کو جیل بھیج دیا۔ لڑکے کو پکڑتے ہوئے پولیس نے لڑکی کو بھی تھانہ لے جانے کی کوشش کی لیکن گھر والوں نے لڑکی کو یہ کہہ کر تھانہ نہیں جانے دیا کہ صبح تھانہ لے آئیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

گھر بیٹھے آدھار کارڈ میں اپنا موبائل نمبر یا نام، پتہ تبدیل کریں، جانیں یہ آسان طریقہ

جمعرات کی صبح پولیس کو خبر ملی کہ لڑکی نے خودکشی کر لی ہے۔ لڑکی کے والد ثناء اللہ نے پولیس کو بتایا کہ لڑکی رات کو ایک کمرے میں تھی۔ صبح جب ہم نے دروازہ کھولنے کی کوشش کی تو دروازہ نہیں کھلا۔ دروازہ توڑنے پر لڑکی کی لاش پنکھے سے لٹکی ہوئی ملی۔ اس کے بعد لڑکے کے خلاف خودکشی کے لیے اکسانے کا ایک اور مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

فی الحال گرفتار لڑکا شاہد حسین کو جیل بھیج دیا گیا ہے۔ ایس ڈی پی او کندن کمار نے بتایا کہ ابتدائی طور پر معاملہ خودکشی کا لگتا ہے تاہم موت کی وجہ پوسٹ مارٹم رپورٹ آنے کے بعد ہی معلوم ہوگی۔ فی الحال پولیس نے اس معاملے میں دو الگ الگ مقدمات درج کر لیے ہیں۔ بتا دیں کہ ملزم لڑکا بھی اسی گاؤں کا رہنے والا ہے جہاں لڑکی کا گھر ہے۔ اب پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد ہی پتہ چلے گا کہ لڑکی نے خودکشی کی یا گھر والوں نے اسے قتل کرکے خودکشی کی شکل دی ہے ۔

ان خبروں کو بھی پڑھیں

سورس : نیوز 18

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button