اہم خبریںبین ریاستی خبریںدہلی

16 مارچ سے پہلے پیٹرول – ڈیزل کی قیمت میں 12 روپے کا ہو سکتا ہے اضافہ ، تیل کمپنیوں کو ہو رہا ہے نقصان

نئی دہلی : روس یوکرین جنگ کے باعث عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتوں میں اضافہ جاری ہے۔ اس کے باوجود پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کی وجہ سے چار ماہ سے ہندوستانی بازار میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ نہیں ہوا ہے۔

آئی سی آئی سی آئی سیکیورٹیز نے ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ گزشتہ دو مہینوں میں عالمی سطح پر خام تیل کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے سرکاری ریٹیل آئل کمپنیوں کو بھاری نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے۔ گھریلو تیل کمپنیوں کو صرف لاگت کو پورا کرنے کے لیے 16 مارچ 2022 کو یا اس سے پہلے پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں 12.1 روپے فی لیٹر اضافہ کرنا پڑے گا۔

آئی سی آئی سی آئی سیکورٹیز کا کہنا ہے کہ منافع کو شامل کرتے ہوئے انہیں قیمت میں 15.1 روپے فی لیٹر اضافہ کرنا پڑے گا۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہندوستان اپنی ضرورت کا 85 فیصد خام تیل درآمد کرتا ہے۔ اس لیے گھریلو سطح پر پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں خام تیل کی عالمی قیمتوں سے متاثر ہوتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

بہار میں راشن کارڈ کے لیے آن لائن درخواست شروع، جلدی کریں رجسٹریشن، یہاں جانیں درخواست دینے کا طریقہ

۔Mobile phone میں ہی ڈاؤن لوڈ کریں Digital ووٹر کارڈ (Voter Card) ، ووٹنگ کے ساتھ فوٹو آئی ڈی میں بھی آئے گا کام، ڈاؤن لوڈنگ کا جانیں طریقہ

تو منافع میں 10.1 روپے کی کمی ہو سکتی ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ خوردہ تیل کمپنیوں کا خالص منافع 3 مارچ 2022 تک مائنس 4.29 روپے فی لیٹر تک پہنچ گیا ہے، جس کی وجہ مقامی مارکیٹ میں دیوالی کے بعد قیمتوں میں کوئی اضافہ نہیں ہوا۔ اگر پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ نہ کیا گیا تو موجودہ عالمی قیمت پر ان کمپنیوں کا خالص منافع 16 مارچ تک صفر 10.1 روپے فی لیٹر اور یکم اپریل 2022 تک 12.6 روپے فی لیٹر تک پہنچ سکتا ہے۔

خام تیل 9 سال کی بلند ترین سطح پر

عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت 120 ڈالر فی بیرل تک پہنچ گئی۔ یہ اس کی 9 سال کی بلند ترین سطح ہے۔ تاہم اس کے بعد قیمتوں میں کچھ نرمی کے ساتھ خام تیل 111 ڈالر فی بیرل پر آگیا۔ اس کے باوجود تیل کی قیمت اور ریٹیل سیلز ریٹس کے درمیان فرق بڑھتا جا رہا ہے۔

کروڈ 185 ڈالر تک پہنچ سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

گھر بیٹھے آدھار کارڈ میں اپنا موبائل نمبر یا نام، پتہ تبدیل کریں، جانیں یہ آسان طریقہ

اگر PAN کارڈ کو ADAHAR CARD سے لنک نہیں کیا ہے تو اب کر لیں ، ورنہ لگے گا جرمانہ ، جانیں لنک کرنے کا طریقہ اور لنک کرنے کی آخری تاریخ

مورگن سٹینلے کا کہنا ہے کہ امریکہ اور یورپی ممالک کی پابندیوں کی وجہ سے روس آزادانہ طور پر تیل برآمد کرنے کے قابل نہیں ہے۔ اس وقت وہ صرف 66 فیصد تیل برآمد کر رہا ہے۔ اگر روس سے تیل کی سپلائی اسی طرح متاثر ہوتی رہی تو عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت 185 ڈالر تک پہنچ سکتی ہے۔

چار ماہ میں قیمت میں 35.89 روپے کا اضافہ ہوا۔

پیٹرولیم پلاننگ اینڈ اینالیسس سیل (PPAC) کے مطابق، ہندوستان جو خام تیل خریدتا ہے اس کی قیمت 3 مارچ 2022 کو بڑھ کر $117.39 فی بیرل ہوگئی۔ یہ قیمت 2012 کے بعد سب سے زیادہ ہے۔ گزشتہ سال نومبر کے اوائل میں جب پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ روکا گیا تو خام تیل کی اوسط قیمت 81.5 ڈالر فی بیرل تھی۔ اس طرح چار ماہ میں خام تیل کی قیمت میں 35.89 روپے کا اضافہ ہوا ہے۔

قومی ترجمان کا ٹیلیگرام گروپ جوائن کرنے کے لیے یہاں کلک کریں!

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button