عجیب و غریب

عجیب و غریب : خاتون ایک ساتھ 2 مردوں کے بچوں کی ماں بن گئی!

خاتون نے جڑواں بچوں کو جنم دیا۔ جب دونوں بچے 8 ماہ کے ہوئے تو ڈی این اے ٹیسٹ کرایا گیا۔ اس ٹیسٹ کے حیران کن نتائج سامنے آئے۔ دونوں بچوں کا باپ الگ الگ نکل آیا۔ خاتون نے بتایا کہ اس کے ایک ہی دن میں دو مختلف مردوں سے تعلقات تھے۔ ایک ڈاکٹر نے اس کیس کے بارے میں بتایا ہے۔

ایک 19 سالہ لڑکی نے جڑواں بچوں کو جنم دیا۔ خاص بات یہ ہے کہ دونوں بچوں کے والد مختلف ہیں۔ دراصل لڑکی کا دونوں مردوں سے ایک ہی دن رشتہ ہوا تھا۔ تاہم بیک وقت دو مختلف مردوں سے حاملہ ہونے کا واقعہ بہت کم ہوتا ہے۔

معاملہ پرتگال کی گویا ریاست کا ہے۔ یہاں کے شہر Mineros میں ایک نوجوان خاتون نے جڑواں بچوں کو جنم دیا۔ والدہ نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ جب دونوں بچے 8 ماہ کے ہوئے تو ان کا ڈی این اے ٹیسٹ کرایا گیا۔

ٹیسٹ کے نتائج چونکا دینے والے تھے۔ وہ شخص، جس کے بارے میں خیال کیا جاتا تھا کہ وہ دونوں بچوں کا باپ ہے، درحقیقت اس کا ایک ہی بچہ تھا۔ دوسرے بچے کی رپورٹ منفی آئی۔

لڑکی نے بتایا- مجھے یاد آیا کہ میرا اسی دن کسی اور شخص سے رشتہ ہوا تھا۔ اس شخص کا ڈی این اے دوسرے بچے کے ڈی این اے سے ملا۔ میں ان نتائج کو دیکھ کر حیران رہ گیا۔ میں نہیں جانتا تھا کہ ایسا ہو سکتا ہے اور اگرچہ دونوں بچے بالکل ایک جیسے نظر آتے ہیں۔

تاہم برتھ سرٹیفکیٹ میں دونوں بچوں کا باپ ایک ہی شخص کا ذکر ہے۔ اس نے کہا- وہ دونوں بچوں کا خیال رکھتا ہے۔ وہ دونوں بچوں کی پرورش میں بہت مدد کرتا ہے۔

غیر معمولی حمل پر تحقیق کرنے والے ڈاکٹر ٹولیو جارج فرانکو نے بتایا کہ اب تک دنیا میں ایسے صرف 20 کیسز سامنے آئے ہیں جن میں جڑواں بچوں کے باپ مختلف ہیں۔ سائنس دانوں کی زبان میں اس کیفیت کو ہیٹروپیرینٹل سپرفیکنڈیشن کہتے ہیں۔

ایک عورت کے 2 انڈے مختلف مردوں کے ذریعے فرٹیلائز ہوتے ہیں

پرتگال کے نیوز آؤٹ لیٹ جی ون سے بات چیت میں ڈاکٹر نے بتایا کہ ایسا حمل اس وقت ہوتا ہے جب ایک ہی ماں کے دو انڈوں کو مختلف مردوں کے ذریعے فرٹیلائز کیا جاتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا- لڑکی کا حمل بالکل نارمل تھا۔ دونوں بچے بالکل صحت مند پیدا ہوئے ہیں اور اب تک ان دونوں کو صحت کا کوئی مسئلہ نہیں ہے۔

پرتگال کے نیوز آؤٹ لیٹ جی ون سے بات چیت میں ڈاکٹر نے بتایا کہ ایسا حمل اس وقت ہوتا ہے جب ایک ہی ماں کے دو انڈوں کو مختلف مردوں کے ذریعے فرٹیلائز کیا جاتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا- لڑکی کا حمل بالکل نارمل تھا۔ دونوں بچے بالکل صحت مند پیدا ہوئے ہیں اور اب تک ان دونوں کو صحت کا کوئی مسئلہ نہیں ہے۔

ڈاکٹر نے کہا- ایسا ہونا بہت کم ہوتا ہے۔ میں نے کبھی نہیں سوچا تھا کہ میں خود ایسے کیس کا گواہ بن سکوں گا۔ڈاکٹر نے اس ہفتے اس معاملے کا انکشاف کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ جڑواں بچوں کی عمر اب 1 سال 4 ماہ ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button