Featuredاہم خبریںسائنس / کلائمیٹعالمی خبریں

عجیب و غریب : جرمنی کے اسکول میں تیسری جماعت کے بیمار طالب علم کی بجائے روبوٹ پڑھنے جاتا ہے !


روبوٹ کلاس میں باقی بچوں سے بھی بات کرتا ہے۔



لوکل کونسل اس منصوبے کو نجی ادائیگی کی بنیاد پر چلا رہی ہے۔



طالب علم کو پھیپھڑوں کی شدید بیماری ہے۔


جرمنی میں 7 سالہ بچہ بیمار ہوا تو روبوٹ نے سکول جانے کی بجائے سکول جانا شروع کر دیا۔ یہ روبوٹ کلاس میں اس بچے کی جگہ بیٹھا ہے۔ جوشوا مارٹینجیلی نامی اس طالب علم کی پڑھائی میں رکاوٹ نہ ڈالنے کے لیے، اس کا روبوٹ اوتار اسکول کی کلاس میں جاتا ہے۔ جب بھی جوشوا کو کچھ کہنا ہوتا ہے تو یہ روبوٹ پلک جھپکتا ہے۔


برلن میں Pusteblume-Grundschule کی ہیڈ مسٹریس Ute Winterberg نے ایک انٹرویو میں روئٹرز کو بتایا: "کلاس کے بچے اس (روبوٹ) سے بات کرتے ہیں، اس کے ساتھ ہنستے ہیں اور یہاں تک کہ جب وہ پڑھ رہے ہوتے ہیں تو اس کے ساتھ چیٹ بھی کرتے ہیں۔”


جوشوا کی والدہ سیمون مارٹینجیلی نے کہا کہ ان کا بیٹا پھیپھڑوں کی ایک سنگین بیماری کی وجہ سے اسکول میں کلاس نہیں جا سکتا تھا جس کی وجہ سے اس کی گردن میں ایک ٹیوب ڈالی گئی تھی۔


یہ روبوٹ اوتار پروجیکٹ برلن کے مارزاہن ہیلرزڈورف ضلع میں ایک مقامی کونسل کے ذریعے نجی ادائیگی کی بنیاد پر چلایا جا رہا ہے۔ کونسل کا کہنا ہے کہ اس نے ضلع کے اسکولوں کے لیے ایسے 4 روبوٹ اوتار دستیاب کرائے ہیں۔ اس کے پیچھے الہام کورونا وبائی مرض تھا۔ کونسل کا خیال ہے کہ یہ وبائی امراض کے بعد تعلیم کا مستقبل ہے۔


کونسل سے وابستہ ایک کونسلر نے بتایا کہ کئی بار ایسا ہوتا ہے کہ بچہ مختلف وجوہات کی بنا پر اسکول نہیں جا پاتا۔ ایسی صورت حال میں روبوٹک اوتار اس بچے کو اسکول سے جڑنے میں مدد کرتا ہے اور اسے یہ محسوس کرتا ہے کہ وہ بھی اسکول کی کمیونٹی کا حصہ ہے۔ کونسل نے اس پروجیکٹ کو ریاستی سطح پر سیاسی بحث کے لیے بھی آگے لایا ہے۔


جوشوا کی کلاس کے ایک بچے نوح کوسنر نے کہا کہ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا وہ جوشوا کو دوبارہ اسکول میں دیکھنا چاہتا ہے تو اسے یہ پسند آیا۔ ان کا کہنا تھا کہ چاہے یہ جوشوا کا روبوٹ اوتار ہو یا جوشوا خود ہو، وہ اسے پسند کرتے ہیں۔


جوشوا کے ایک اور ہم جماعت بیریٹن اسلنگلو نے کہا کہ بہتر ہو گا کہ جوشوا خود سکول آ سکے۔



جدید ٹیکنالوجی جہاں روزمرہ کی زندگی میں نئی سہولتیں لا رہی ہے وہیں یہ انسان کی سماجی زندگی میں بھی اہم کردار ادا کر رہی ہے۔ اسکولوں میں روبوٹ اوتار درحقیقت کسی سنگین بیماری یا وبائی بیماری کے دوران پڑھائی جاری رکھنے کے لیے ایک بہتر آپشن ثابت ہو سکتے ہیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button