اسپورٹس

روہت کی کپتانی میں ہندوستانی ٹیم نے T20 میں بھی ویسٹ انڈیز کا کیا صفایا، بھارتی ٹیم T20 میں بن گئی نمبر ون ، تیسرا میچ 17 رنز سے جیتا

ہندوستان نے اتوار کو یہاں تیسرے اور آخری T20 انٹرنیشنل میچ میں ویسٹ انڈیز کو 17 رنز سے شکست دینے کے بعد سری کمار یادو کی تیز نصف سنچری اننگز اور گیند بازوں کی شاندار کارکردگی سے سیریز 3-0 سے جیت لی۔  اس کے ساتھ ہی ہندوستانی ٹیم T20 ICC رینکنگ (ICC T20 Ranking) میں ٹاپ پر پہنچ گئی۔ سال 2016 کے بعد پہلی بار ہندوستانی ٹیم T20 میں نمبر ون ٹیم بن گئی ہے۔ ساتھ ہی انگلینڈ کی ٹیم پہلے نمبر پر ہے۔ دو میچ کے بارے میں بات کریں تو بیٹنگ کی دعوت ملنے کے بعد ہندوستان نے سوریہ کمار یادو کے 65 رنز اور وینکٹیش ایر (35 ناٹ آؤٹ) کے ساتھ چوتھی وکٹ کے لیے 37 گیندوں میں 91 رنز کی مدد سے پانچ وکٹ پر 184 رنز بنائے۔

نکولس پوران کی 61 رنز کی نصف سنچری اننگز، وہ 20 اوورز میں 9 وکٹوں پر 167 رنز ہی بنا سکے۔بھارت کی جانب سے دیپک چاہر نے صرف 11 گیندیں کیں جس میں انہوں نے دو وکٹیں حاصل کیں تاہم اس کے بعد وہ زخمی ہو گئے۔ہرشل پٹیل نے شاندار بولنگ کی، جبکہ شاردول ٹھاکر نے 33 رنز کے عوض دو وکٹیں حاصل کیں۔

وینک ٹیش آیر نے اپنی آل راؤنڈ کارکردگی سے سب کو متاثر کیا، پہلے بلے بازی میں سوریہ کمار کا ساتھ دیا اور پھر 2.1 اوور میں 23 رنز دے کر دو وکٹ لیے۔

سوریہ کمار نے T20 انٹرنیشنل میں اپنی بہترین کارکردگی پیش کرتے ہوئے 31 گیندوں کی اننگز میں سات چھکے اور ایک چوکا لگایا۔  وہ اننگز کی آخری گیند پر آؤٹ ہوئے۔  وینکٹیش آئیر نے 19 گیندوں پر چار چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 35 رنز بنا کر اپنا اچھا ساتھ دیا۔  بھارت نے آخری پانچ اووروں میں 86 رنز جوڑے۔  ہندوستان کے ہدف کے تعاقب میں ویسٹ انڈیز نے جلد ہی اوپنرز کائل میئرز اور شائی ہوپ کی وکٹیں گنوا دیں۔

اپنے دو اوورز میں دیپک چاہر نے ان دونوں کھلاڑیوں کو ایشان کشن کے ہاتھوں وکٹ کے پیچھے کیچ کرایا۔  لیکن اس کے بعد وہ پٹھوں میں کھچاؤ کی وجہ سے دوسرا اوور مکمل نہیں کر سکے جس کی وجہ سے وینکٹیش ایئر نے اپنے اوور کی آخری گیند پھینک دی۔  وکٹ کیپر بلے باز نکولس پوران اور روومین پاول کریز پر موجود تھے، دونوں تیزی سے رنز بنانے کی کوشش کر رہے تھے، ساتویں اوور میں روومین پاول نے ہرشل پٹیل کی گیند کو فائن لیگ پر پکڑا اور شاردول ٹھاکر نے پیچھے کی طرف بھاگتے ہوئے شاندار کیچ لیا۔

اس طرح روومین کی 14 گیندوں میں دو چھکوں اور دو چوکوں سے جڑی 25 رنز کی اننگز کا خاتمہ ہوا۔  اس کے بعد ویسٹ انڈیز نے تیزی سے تین وکٹیں گنوا دیں۔  لیکن پران اپنے انجام پر کھڑا رہا، اس دوران اسے ایک بار زندگی کا عطیہ بھی ملا۔  وینکٹیش آئیر نے کپتان کیرون پولارڈ (05) کو ڈیپ کور میں مجبور کیا جہاں وہ روی بشنوئی کے ہاتھوں کیچ ہو گئے اور ویسٹ انڈیز نے 82 رنز پر اپنی چوتھی وکٹ گنوا دی۔

اس کے بعد وینکٹیش ایر نے ٹیم کو جیسن ہولڈر کی شکل میں پانچویں وکٹ حاصل کی۔  روسٹن چیز (12) کو ہرشل پٹیل نے بولڈ کیا۔  روماریو شیپرڈ اب پوران کے ساتھ تھا۔  پوران نے اس دوران 39 گیندوں میں 50 رنز مکمل کیے۔  اس طرح انہوں نے اس ٹی ٹوئنٹی سیریز میں مسلسل تیسری نصف سنچری اسکور کی۔  ویسٹ انڈیز کو جیتنے کے لیے آخری تین اوورز میں 37 رنز درکار تھے اور ان کی امیدیں پوران اور شیپرڈ پر جمی ہوئی تھیں۔  شیپرڈ نے تین اونچے چھکے لگائے اور ہندوستان کو شاردول ٹھاکر نے پوران کی اہم وکٹ حاصل کی۔

پوران نے اپنی دھیمی گیند کو بہت اوپر اٹھایا اور ایشان کشن نے بھاگ کر یہ کیچ لیا۔  اس کے بعد شیپرڈ ہرشل پٹیل کی گیند پر اونچے بیٹھے اور روہت نے کیچ لے کر ان کی 29 رنز کی اننگز کا خاتمہ کیا۔  اس کے بعد ہندوستانی کپتان روہت نے شاندار کیچ لیا اور شاردول ٹھاکر کی گیند لے کر ڈومینک ڈریکس پویلین پہنچ گئے۔  بھارت نے اویش خان T20 انٹرنیشنل میں اپنا ڈیبیو کیا، اپنے چار اوورز میں 42 رنز دیے۔

ان خبروں کو بھی پڑھیں

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button