تازہ ترینتعلیم و روزگار

جانیں ای-شرم کارڈ کے لیے کون-کون دے سکتا ہے درخواست ؟ اور کیا ہیں ای شرم کارڈ کے فائدے


غیر منظم شعبے کے مزدوروں کے لیے مرکزی حکومت نے سال 2021 میں ای-شرم پورٹل شروع کیا تھا تاکہ ان تمام لوگوں کا ڈیٹا بیس تیار کر کے انھیں مالی مدد فراہم کی جا سکے۔حکومت کی اس اسکیم میں کل 18 کروڑ لوگوں نے رجسٹریشن کرایا ہے۔ اس کے ساتھ ہی وزارت محنت اور روزگار کے آفیشل ٹویٹر ہینڈل سے لوگوں کو اس سے متعلق معلومات مسلسل دی جا رہی ہیں۔ تاہم اب بھی بہت سے لوگوں کے ذہنوں میں یہ سوال موجود ہے کہ اس پورٹل پر کون رجسٹر ہو سکتا ہے۔

ٹویٹر پر یہ سوال پوچھا کہ اگر میں تعمیراتی کارکن ہوں تو کیا میں ای شرم پورٹل پر رجسٹر ہو سکتا ہوں؟ اس سوال کے جواب میں لکھا گیا ہے کہ ہاں! تعمیراتی کارکن، مائیگرینٹ ورکر، سڑک پر دکاندار، گھریلو ملازمین، زرعی کارکن اور کوئی بھی دوسرے کارکن جو ESIC یا EPFO کے ممبر نہیں ہیں وہ ای-شرم پورٹل پر رجسٹر کر سکتے ہیں۔



ٹیوٹر، نوکرانی – گھر کا نوکر، کھانا پکانے والی ملازمہ، صفائی ملازم، گارڈ، بڑھئی، پلمبر، الیکٹریشن، پوٹائی والا (پینٹر)، ٹائل والا، بیوٹی پارلر ورکر، نائی، موچی، درزی، ویلڈر، زرعی مزدور، نریگا ورکرز، اینٹوں بھٹوں کے مزدور، , چھوٹی چھت بنانے والے، بت بنانے والے، پتھر توڑنے والے، کان کے مزدور، ماہی گیر، ریزہ، پورٹر، رکشہ چلانے والے، کسی بھی قسم کے گاڑیاں بیچنے والے (فروخت کرنے والے)، چاٹ والا، بھیل والا، چائے والا، ہوٹل کا نوکر/ویٹر، ریسپشنسٹ، انکوائری کلرک ، آپریٹر، ہر دکان کا ملازم/ سیلز مین/ مددگار، آٹو ڈرائیور، ڈرائیور، پنچر بنانے والا، چرواہا، ڈیری مین، تمام مویشی چرانے والا، ڈرائیور، پنکچر بنانے والا، چرواہا، پیپر ہاکر، زوماٹو سوئگی ڈیلیوری بوائے، ڈیلیوری بوائے (کوریئر)، نرس وارڈ بوائے، آیا، مندر کے پجاری، مختلف سرکاری دفاتر سے روزانہ اجرت حاصل کرنے والے یعنی ہر وہ شخص جو آپ کے آس پاس نظر آتا ہے یہ کارکن کا کارڈ یعنی ای شرم کارڈ بنا سکتا ہے۔

ای شرم کارڈ پورے ملک میں قابل قبول ہے۔ اس کے بہت سے فائدے ہیں۔ رجسٹریشن کے بعد ورکرز کو ایکسیڈنٹ انشورنس کی سہولت بھی دی جاتی ہے۔ PMSBY کے تحت جزوی معذوری کے لیے 1 لاکھ روپے اور مستقل معذوری کے لیے 2 لاکھ روپے تک کا انشورنس کور دستیاب ہوگا۔ جہاں یوپی حکومت پورٹل میں شامل ہونے والے کارکنوں کو مارچ تک 500 روپے ماہانہ دے رہی ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button