اہم خبریںتازہ ترینقومی خبریں

بیوی سے گینگ ریپ کا فلمی انداز میں لیا بدلہ ، بٹن اسٹارٹ کرتے ہی اڑ گئے چیتھڑے

اسکریو ڈرایور اور سپیڈ سے مٹی کھودیں اور اسے 14 راڈ اور ڈیٹرونیٹر ٹیوب ویل کے اسٹارٹر سے جوڑ دیا

ایم پی کے ضلع رتلام میں شوہر نے فلمی انداز میں بیوی کے ساتھ گینگ ریپ کا بدلہ لیتے ہوئے ملزم کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔ جب پہلے حملے میں ملزم کی موت نہیں ہوئی تو اس نے چھ ماہ بعد دوبارہ حملہ کرکے اپنا انتقام لے لیا۔ معاملے کے انکشاف کے بعد پولیس نے شوہر کو گرفتار کر لیا ہے جبکہ گینگ ریپ کے باقی دو ملزمان کو بھی پکڑ لیا گیا ہے۔ حملے کے لیے دھماکہ خیز مواد دینے والا شخص بھی حراست میں ہے۔

چند روز قبل رتلام کے رتگکھیڑا گاؤں میں کسان لال سنگھ نے اپنے کھیت میں ٹیوب ویل شروع کیا تو اس کے چیتھڑے اڑ گئے۔ ابتدائی تفتیش میں ہی پولیس کو شبہ ہوا کہ یہ قتل ہے۔ تحقیقات کے دوران پتہ چلا کہ گاؤں کا ایک نوجوان واقعہ کے دن سے ہی خاندان کے ساتھ لاپتہ ہے۔ پولیس نے اس کا موبائل ٹریس کرکے اسے ٹریس کیا۔ استفسار پر وہ ٹوٹ پڑا اور مکمل انکشافات کر ڈالے۔ اس نے بتایا کہ اس نے دھماکہ خیز مواد کو موٹر کے سٹارٹر سے جوڑا تھا اور جیسے ہی لال سنگھ نے بٹن دبایا وہ پھٹ گیا۔

لال سنگھ کے قتل میں گرفتار سریش نے بتایا کہ ایک سال قبل سابق سرپنچ بھور لال، لال سنگھ اور دنیش نے اس کی بیوی کے ساتھ اجتماعی زیادتی کی تھی۔ تینوں اسے بھی دھمکیاں دے رہے تھے جس کے بعد اس نے تینوں کو قتل کرنے کا عزم ظاہر کیا۔ سب سے پہلے اس نے بھور لال کو مارنے کی کوشش کی۔ اسی انداز سے اسے مارنا چاہتا تھا لیکن اس وقت دھماکہ خیز مواد کم ہونے کی وجہ سے وہ نہیں مرا۔ اس کے بعد وہ 4 جنوری کی سہ پہر 3 بجے لال سنگھ کے فارم پر پہنچا۔ اسکریو ڈرایور اور سپیڈ سے مٹی کھودیں اور اسے 14 راڈ اور ڈیٹرونیٹر ٹیوب ویل کے اسٹارٹر سے جوڑ دیں۔ اس کے بعد جیسے ہی لال سنگھ نے صبح سٹارٹر کا بٹن دبایا اس کے جسم کے ٹکڑے ٹکڑے ہو گئے۔

بھاگ گیا تھا مندسور

پولیس نے بتایا کہ گاؤں والوں نے بتایا کہ واقعہ سے پہلے ہی سریش لودھا کا رویہ مشکوک لگ رہا تھا۔ اس واقعے سے قبل بھی وہ بچوں کو مندسور کے قریب چھوڑ گیا تھا۔ اس واقعہ کے بعد وہ خود وہاں گئے تھے۔ پولیس نے اس سے پوچھ گچھ کی تو اس نے قتل کا اعتراف کر لیا۔

بدری لال کے والد رامیشور پاٹیدار عمر 40 کے رہنے والے سملاواڑا کو بھی اس معاملے میں گرفتار کیا گیا ہے۔ اس نے قتل کے لیے ڈیٹونیٹرز اور جیلیٹن فروخت کیے تھے۔ اس کے پاس ان دھماکہ خیز مواد کو فروخت کرنے کا لائسنس بھی نہیں ہے۔ ایس پی نے یہ بھی بتایا کہ جب پولیس نے تفتیش کے دوران ملزمین اور دیگر گاؤں والوں سے پوچھ گچھ کی تو پتہ چلا کہ گاؤں میں تقریباً ہر کسی کو ڈیٹونیٹر، جیلیٹن اور اس کے پھٹنے کے طریقے کا علم ہے۔ گاؤں والے اسے کنویں وغیرہ کھودنے کے لیے استعمال کرتے ہیں۔

گینگ ریپ کے دیگر ملزمان گرفتار

پولیس نے جہاں قتل کے ملزم کو گرفتار کیا وہیں ملزم کی بیوی کے ساتھ اجتماعی عصمت دری کا معاملہ درج کرتے ہوئے دو دیگر ملزمین سرپنچ بھور لال، دنیش کے خلاف بھی مقدمہ درج کرکے گرفتار کرلیا ہے۔ ایس پی رتلام گورو تیواری نے کہا کہ ملزمین کو سخت سزا دی جائے گی۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button