ارریہارولاہم خبریںاورنگ آبادبانکابکسربھاگلپوربھوجپوربہاربیگوسراےپٹنہپورنیہتعلیم و روزگارجموئیجہان آباددربھنگہروہتاسسارنسپولسمستی پورسہرسہسیتامڑھیسیوانشیخوپورہشیوہرکٹیہارکشن گنجکھگڑیاکیمورگوپال گنجگیالکھی سرائےمدھوبنیمدھے پورامشرقی چمپارنمظفر پورمغربی چمپارنمونگیرنالندہنواداویشالی

بہار کے 42 ہزار اساتذہ امیدواروں کو 23 فروری سے ملے گا تقرری نامہ

پٹنہ، 16 فروری (قومی ترجمان) بہار میں ٹیچر بننے کا خواب دیکھنے والوں کو یہ خبر بڑی راحت دے سکتی ہے۔ پہلی سے آٹھویں جماعت تک کے اساتذہ کو 23 فروری سے تقرری لیٹر دیے جائیں گے۔ ریاست میں ایلیمنٹری اسکولوں کے لیے منتخب کیے گئے 42,902 ٹیچر امیدواروں کو تقرری نامہ دئے جانے کے تعلق سے وزیر تعلیم وجے کمار چودھری نے منگل کو ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ تقرری لیٹر ملنے کے فوراً بعد اساتذہ اسکولوں میں اپنا شراکت داری دے سکتے ہیں۔

خیال رہے جن اساتذہ امیدواروں کی سرٹیفکیٹ کی تصدیق ہو گئی ہے ان امیدواروں کی تنخواہ کی ادائیگی بھی فوری شروع ہو جائے گی۔ جن اساتذہ کی سرٹیفکیٹ کی تصدیق نہیں ہو سکی ہے ان کی تنخواہ کی ادائیگی سرٹیفکیٹ جانچ پڑتال کے بعد کی جائے گی۔

تقرری نامہ اور پوسٹنگ کے لیے رہنما خطوط جاری کیے جائیں گے۔

وزیر تعلیم نے کہا کہ اب تک کی تحقیقات میں 562 امیدواروں کے ٹی ای ٹی سرٹیفکیٹ جعلی پائے گئے اور 358 سرٹیفکیٹس کی تصدیق نہیں ہو سکی ہے۔

امیدواروں کے سرٹیفکیٹس میں کوئی تضاد پایا گیا تو ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

بھوجپور میں سی ٹی ای ٹی کے 93 سرٹیفکیٹس میں سب سے زیادہ تضادات پائے گئے ہیں۔ مشرقی چمپارن میں 65 سرٹیفکیٹس میں تضاد ہے۔

ابتدائی اساتذہ کی 90,762 آسامیوں پر منتخب ہونے والے امیدواروں کی تعداد میں 95 فیصد سے زائد امیدواروں کے اساتذہ کی اہلیت کے ٹیسٹ کے سرٹیفکیٹس کی تصدیق مکمل کر لی گئی ہے۔

وزیر تعلیم نے کہا کہ بی ٹی ای ٹی، سی ٹی ای ٹی سرٹیفکیٹ کی جانچ پڑتال کی گئی۔ تربیت سے متعلق سرٹیفکیٹ کی تصدیق میں وقت لگ رہا ہے۔ ایسے میں منتخب امیدواروں کے صبر کا پیمانہ بھی لبریز ہے۔ اس معاملے میں سی ایم نتیش سے مشاورت کے بعد تقرری کا کام مکمل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اعلیٰ سطحی اجلاس کے بعد فیصلہ کیا گیا ہے کہ ٹیچر امیدواروں کو تقرری نامہ 23 فروری سے دیے جائیں گے۔

وزیر تعلیم نے یہ بھی بتایا کہ چھٹے مرحلے کے سیکنڈری اور ہائر سیکنڈری اساتذہ کی بحالی پر پابندی لگا دی گئی ہے۔ عدالت نے اس سلسلے میں محکمہ تعلیم کو حکم دیا ہے۔ اس وجہ سے ابھی کونسلنگ نہیں ہوگی۔ اس کے لیے دوبارہ اشتہار جاری کرنا ہوگا۔ میرٹ اور نان میرٹ کا کوئی مطلب نہیں۔ جب بھی آسامیاں آئیں گی دونوں اہلیت برقرار رکھیں گے۔

وزیر تعلیم نے کہا کہ امیدواروں کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں۔ دونوں کی اہلیت باقی رہے گی۔ STET کے امیدواروں کو سمجھنا چاہیے۔

تقرری نامہ پوسٹنگ کی جگہ کے ساتھ دستیاب ہوگا۔ پوسٹنگ میرٹ کم چوائس کی بنیاد پر ہوگی۔ اس میں معذوروں اور خواتین کو بھی ترجیح دی جائے گی۔

ان خبروں کو بھی پڑھیں

سورس : نیوز 18

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button