اہم خبریںبہاربین ریاستی خبریں

بہار میں محمد عبداللہ اُمیش بن گیا ، قرآن چھوڑ کر پہن لیا جینو

تاج پور/سمستی پور – بہار میں محمد عبداللہ نامی شخص نے سناتن دھرم کو اپنایا اور کالی مندر میں سب عمل مکمل کیا۔ اس نے جنیو اور پیلے رنگ کے کپڑے پہنا اور اپنا نام بدل کر امیش رکھ لیا۔ 10 سال قبل بھی اس نوجوان نے اسی طرح لوگوں کو حیران کیا تھا۔

یوپی میں وسیم رضوی کے سناتن فرقہ اپنانے کے بعد بہار میں بھی ایسا ہی معاملہ سامنے آیا ہے۔سمستی پور کے عبداللہ نامی شخص نے سناتن مت کو اپنا کر امیش بننے کا فیصلہ کیا ہے۔ تاج پور کے رہائشی عبداللہ کو ہفتے کو یہ واقعہ پیش آیا۔ تازہ معاملہ تاج پور تھانے کے تحت بھیروکھرا گاؤں کا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ تقریباً دس سال قبل بھیروکھرا گاؤں کے امیش رائے نے سناتن دھرم کو چھوڑ کر اسلام قبول کیا تھا۔ حالیہ دنوں میں امیش عرف عبداللہ کو محلے کے ایک نوجوان نے قتل کرنے کی کوشش کی تھی۔ جس کے بعد عبداللہ نے پنچایت بلائی۔ پنچایت میں اس کے برعکس عبداللہ کو مجرم سمجھتے ہوئے بری کر دیا گیا۔ جس کی وجہ سے عبداللہ نے پھر سے سناتن دھرم میں واپس آنے کا ارادہ کیا۔

سنیچر کو وہ سینکڑوں لوگوں کی موجودگی میں سناتن دھرم کو قبول کر لیا ۔عبداللہ عرف اُمیش کو پورے ودھی ودھان کے ساتھ بھیروکھرا کے کالی مندر میں سناتن دھرم میں شامل کرایا گیا۔گنگا کے پانی سے غسل کرایا گیا۔داڑھی اور سر کے بال منڈوائے گیا۔اس کے بعد اسے جینو پہنایا گیا۔ امیش نے کہا کہ ان کی جان کو خطرہ ہے۔

اُمیش کو مسلسل نظر انداز کئے جانے کی وجہ سے تکلیف تھی

بقول امیش کے گھر واپسی کے پروگرام کے بعد میڈیا والوں نے ان سے پوچھا کہ کیا وہ کسی قسم کے دباؤ میں سناتن دھرم پر واپس آرہے ہیں۔ جواب میں امیش نے کہا کہ انہوں نے اپنی مرضی سے گھر واپس آنے کا فیصلہ کیا ہے۔اسلام قبول کرنے کے بعد معاشرے کے لوگوں کا رویہ ان کے کے ساتھ نارمل نہیں رہا تھا۔ حال ہی میں ایک پنچایت میں سب نے اس کو نظرانداز کرتے ہوئے مجرم کے حق میں فیصلہ دیا تھا۔اس واقعے نے اسے اندر سے غیر محفوظ کر دیا تھا۔ اس کے بعد اس نے پھر سے سناتن دھرم میں آنے کا ارادہ کیا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button