اہم خبریںبین ریاستی خبریںتعلیم و روزگار

ایک جسم دو جان ؛ سوہنا کو ملی نوکری ، موہنا اس کا ساتھ دے گا ، ان دونوں بھائیوں کی ہے منفرد کہانی

پنجاب (قومی ترجمان) دو جسم ایک جان، سوہنا موہنا اپنے پیروں پر کھڑے ہو چکے ہیں۔سوہنا کو پنجاب اسٹیٹ پاور کارپوریشن لمیٹڈ (پاور کام) میں نوکری مل گئی ہے، جبکہ موہنا اس کی مدد کرے گا۔ سوہنا پیر کو ڈینٹل کالج کے قریب واقع پاور سٹیشن میں ریگولیٹر ٹی میٹ ( مینٹے نس ملازم) کے طور پر ڈیوٹی جوائن کرے گا۔ اس سے قبل 11 دسمبر کو پاور کام نے انہیں تقرری کا لیٹر دیا تھا۔

پاور کام کے مطابق سوہنا کو بیس ہزار روپے ماہانہ تنخواہ دی جائے گی۔ دراصل، سوہانا-موہنا نے اس سال جولائی میں الیکٹریکل ڈپلومہ کیا ہے۔ اس کے بعد اس نے پاور کام میں جے ای کے عہدے کے لیے اپلائی کیا۔پاور کام اس کشمکش میں تھا کہ کس کو کام دیا جائے۔ وجہ یہ ہے کہ دونوں نے الیکٹریکل ڈپلومہ کیا ہوا ہے اور محکمہ بجلی سے متعلق کام میں بھی ماہر ہیں۔

بالآخر پاور کام انتظامیہ سوہنا کی خدمات حاصل کرنے پر راضی ہو گئی۔

سوہنا نے بتایا کہ سابق وزیر اعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ نے انہیں نوکری دینے کا اعلان کیا تھا۔اس کے بعد پاور کام کے چیف منیجنگ ڈائریکٹر وینو پرساد نے وزیر اعلی چرنجیت سنگھ چنی سے بات کی۔ پانچ ماہ بعد اس کی خواہش پوری ہو گئی۔پاور کام کے مطابق سوہنا کو یہ کام خصوصی کیس کی بنیاد پر دیا گیا ہے۔سوہنا کو دو سال بعد ترقی ملے گی۔

والدین نے پیدائش کے بعد اپنانے سے انکار کر دیا تھا

سوہنا-موہنا 14 جون 2003 کو دہلی کے سوچیتا کرپلانی ہسپتال میں پیدا ہوئے ۔ماں کامنی اور والد سرجیت کمار نے انہیں گھر لے جانے سے انکار کر دیا تھا۔امرتسر میں پنگل واڑہ نے ان کی پرورش کی ذمہ داری لی۔ بی بی اندرجیت نے ان کا نام رکھا۔

ڈاکٹروں نے کہا تھا کہ دونوں زیادہ دیر تک زندہ نہیں رہیں گے لیکن زندگی کی تمام مشکلات کو شکست دیتے ہوئے سوہنا اور موہنا اس سال بالغ ہو گئے۔

دونوں سینے کے نیچے سے ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں۔ان کا سر، سینہ، دل، پھیپھڑے اور ریڑھ کی ہڈی مختلف ہے، لیکن جسم کے دیگر تمام اعضاء بشمول گردہ ، جگر اور مثانہ ایک ہی شخص کی طرح ہیں۔دونوں ایک دوسرے کی مدد سے تمام کام کرتے ہیں۔دونوں بھائیوں کے الگ الگ آدھار کارڈ ہیں۔

ڈاکٹروں کے مطابق دو لاکھ میں ایک ایسا کیس ہوتا ہے، جب جسم سے جڑے بچے پیدا ہوتے ہیں۔ سوہنا اور موہنا بھی ان میں سے ایک ہیں۔

سوہنا-موہنا کو دفتر تک ٹرانسپورٹ کا بندوبست کرنے کی یقین دہانی بھی ملی

دوسری طرف سوہنا-موہنا نے ہفتہ کو ڈپٹی کمشنر گرپریت سنگھ کھیرا سے ملاقات کی اور دفتر آنے جانے کے انتظامات کرنے کا مطالبہ کیا۔ ڈپٹی کمشنر نے اس سلسلے میں پاور کام کے سی ایم ڈی وینو پرساد سے بات کی۔ انہوں نے یقین دلایا کہ سوہنا موہنا کو گھر سے دفتر تک لانے کے انتظامات کئے جائیں گے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button