اہم خبریںبین ریاستی خبریںسائنس / کلائمیٹطب و صحتعالمی خبریں

اومیکرون ڈیلٹا اور کوویڈ کی اصل اقسام سے 70 گنا زیادہ تیزی سے متاثر کر رہا ہے، لیکن…

کووڈ-19 کی ایک نئی قسم اومیکرون کا خوف پوری دنیا میں دن بہ دن بڑھتا جا رہا ہے۔کئی ممالک نے سفر پر مکمل طور پر پابندیاں عائد کر دی ہیں۔ادھر محققین کی جانب سے ایک اور خبر سامنے آئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ Omicron ویریئنٹ ڈیلٹا اور اصل SARS-CoV-2 سے 70 گنا زیادہ تیزی سے متاثر کر رہا ہے۔ اچھی خبر یہ ہے کہ اس سے ہونے والی بیماری کی شدت بہت کم ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ اومیکرون ویریئنٹ ڈیلٹا اور کوویڈ 19 کے اصل ویرینٹ سے 70 گنا زیادہ تیزی سے متاثر ہوتا ہے، لیکن اس سے ہونے والی بیماری کی شدت بہت کم ہے۔

یہ مطالعہ پہلی معلومات فراہم کرتا ہے کہ کس طرح Omicron مختلف قسم کے انسانی نظام تنفس کو متاثر کرتا ہے۔ ہانگ کانگ یونیورسٹی کے محققین نے پایا کہ اومیکرون ڈیلٹا اور اصل SARS-CoV-2 سے 70 گنا زیادہ تیزی سے متاثر ہوتا ہے۔ مطالعہ نے یہ بھی ظاہر کیا کہ پھیپھڑوں میں Omicron کے ساتھ انفیکشن اصل SARS-CoV-2 کے مقابلے میں نمایاں طور پر کم تھا، جو بیماری کی کم شدت کی نشاندہی کرتا ہے۔ محققین نے SARS-CoV-2 کی دیگر اقسام سے Omicron کی تفریق منتقلی اور اس کی وجہ سے ہونے والی بیماری کی شدت کو سمجھنے کے لیے ایک ‘Ex-vivo کلچر’ کا استعمال کیا۔ یہ طریقہ پھیپھڑوں کے علاج کے لیے پھیپھڑوں سے نکالے گئے ٹشو کا استعمال کرتا ہے۔

ہانگ کانگ یونیورسٹی میں ایسوسی ایٹ پروفیسر مائیکل چان چی وائی اور ان کی ٹیم نے کامیابی کے ساتھ اومیکرون کو دوسروں سے الگ کیا اور دیگر اقسام کے ساتھ انفیکشن کا اصل SARS-CoV-2 سے موازنہ کیا۔ ٹیم نے پایا کہ Omicron اصل SARS-CoV-2 اور ڈیلٹا کی مختلف شکلوں کے مقابلے انسانوں میں زیادہ تیزی سے نقل کرتا ہے۔

محققین نے کہا کہ انفیکشن کے 24 گھنٹے بعد، Omicron کی مختلف شکل ڈیلٹا اور اصل SARS-CoV-2 سے تقریباً 70 گنا زیادہ نقل ہوئی۔ تاہم، Omicron اصل SARS-CoV-2 وائرس کے مقابلے میں 10 گنا سے بھی کم انسانی پھیپھڑوں کے خلیوں میں نقل کرتا ہے، جو تجویز کرتا ہے کہ بیماری کم شدید ہے۔ چان نے ایک بیان میں کہا، “یہ بتانا ضروری ہے کہ انسانوں میں بیماری کی شدت کا تعین نہ صرف وائرس کی نقل سے ہوتا ہے بلکہ جسم کی انفیکشن کے خلاف قوت مدافعت سے بھی ہوتا ہے۔”

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button