اہم خبریں

امریکی مصنفہ پدما لکشمی کی کہانی، جنہوں نے ہندوستانی فرقہ وارانہ کشیدگی پر تلخ باتیں کی ہیں، جانیں انہوں نے کیا کچھ کہا

پدما لکشمی۔ہندوستانی نژاد امریکی مصنف، ماڈل اور ٹی وی میزبان۔ 27 اپریل کو انہوں نے ایک ٹویٹ کیا۔ بھارت میں بڑھتی ہوئی فرقہ وارانہ کشیدگی پر تشویش کا اظہار کیا۔ انہوں نے لکھا،

ہندوستان میں مسلمانوں کے خلاف تشدد دیکھ کر دکھ ہوا۔ مسلم مخالف بیان بازی اس کمیونٹی کے لیے خوف اور زہر پیدا کرتی ہے۔ یہ پروپیگنڈہ خطرناک ہے کیونکہ جب آپ کسی کو کم سمجھتے ہیں تو اس کی ہراسانی میں حصہ لینا بہت آسان ہو جاتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

پدما کا یہ ٹویٹ دہلی کے جہانگیر پوری علاقے اور مدھیہ پردیش کے کھرگون میں تشدد اور توڑ پھوڑ کے بعد آیا ہے۔ لوگ پدما کی اس ٹویٹ پر تنقید کر رہے ہیں۔ کوئی کہہ رہا ہے کہ وہ ہندوستانی نہیں ہے تو اسے ہندوستانی اتحاد پر سوال نہیں اٹھانا چاہئے، تو کوئی کہہ رہا ہے کہ آپ خود فرقہ وارانہ منافرت پھیلانے کی کوشش کر رہی ہیں۔

پدما لکشمی کون ہیں؟

پدما لکشمی۔ پورا نام پدما پاروتی لکشمی ویدیا ناتھن۔ ہندوستان کے تامل برہمن خاندان میں پیدا ہوئے۔ پدما لکشمی دو سال کی تھیں جب ان کے والدین میں طلاق ہو گئی۔ اس کے باپ نے اسے کبھی بیٹی کی طرح پیار نہیں کیا۔ پدما اس بارے میں لکھتی ہیں،

"میرے والد نے دوسری بیوی سے پیدا ہوئی اپنی بیٹی کی خاطر اپنی نوکری چھوڑ دی۔ میرے لیے کبھی ایسا کچھ نہیں کیا۔ جیسے میں اس کی بیٹی ہی نہیں ہوں۔”

طلاق کے بعد پدما کی ماں نے بھی دوسری شادی کر لی۔ وہ اپنی ماں اور سوتیلے باپ کے ساتھ کیلیفورنیا چلی گئی۔ سال 2018 میں ‘دی نیویارک ٹائمز’ کے لیے لکھے گئے ایک مضمون میں پدما نے اپنے ساتھ ہونے والے بچوں کے استحصال کا انکشاف کیا۔ پدما 16 سال کی تھی جب اس کے پرانے بوائے فرینڈ نے اسے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا۔

پدما امریکہ میں ہی پلی بڑھی ہیں۔ پہلے کیلیفورنیا میں تعلیم حاصل کی پھر میساچوسٹس میں۔ پڑھائی کے لیے کسی سے پیسے نہیں لیے۔ ایجوکیشن قرض لے کر تعلیم حاصل کی۔ اور کالج کے بعد ماڈلنگ کی اور قرض کی ادائیگی کی ۔

پدما نے 21 سال کی عمر میں ماڈلنگ شروع کی۔ بہت چھوٹی عمر میں ہی وہ ایک کامیاب ماڈل اور نوجوان مصنف بن چکی تھیں۔

پدما لکشمی کی سلمان رشدی سے شادی

امریکی مصنفہ پدما لکشمی کی کہانی، جنہوں نے ہندوستانی فرقہ وارانہ کشیدگی پر تلخ باتیں کی ہیں، جانیں انہوں نے کیا کچھ کہا

پدما نے سال 2000 میں ناول نگار سلمان رشدی سے ملاقات کی۔ سلمان سے ملاقات پر پدما نے لکھا،

"میں 30 سال کی بھی نہیں تھی ۔ کتابوں سے محبت کرتی تھی۔ اور ایک مصنف سے ملاقات ہوئی۔ سلمان سے ملاقات میرے ساتھ سب سے اچھی چیز تھی۔ اگر اس قد و قامت کا کوئی آدمی مجھ سے بات کرنا چاہے تو یہ میرے لیے بڑی بات تھی۔ وہ مجھے لنچ پر لے جانا چاہتا تھا، مجھے یقین نہیں آرہا تھا… رات کے تین بجے اچانک میری آنکھ کھلی۔ اور مجھے لگا کہ میں ایک شادی شدہ آدمی کے بستر پر ہوں۔

پدما اور سلمان کی شادی 2004 میں ہوئی تھی۔ لیکن یہ شادی صرف تین سال چل سکی۔ دونوں سال 2007 میں الگ ہو گئے۔ اس کی وجہ باہمی ناگواری کے ساتھ ساتھ پدما کی بیماری بھی تھی۔ اسے اینڈومیٹرائیوسس نامی بیماری تھی۔ جس میں بچہ دانی کے اندر جو ٹشو بڑھتا ہے اس کے باہر بڑھنا شروع ہو جاتا ہے۔ بچہ دانی کے حصے میں خوفناک درد ہوتا ہے۔ اور بظاہر جنسی تعلق ناممکن ہو جاتا ہے

حالانکہ پدما نے اس بیماری کے لیے سرجری کروائی تھی لیکن مشکل وقت میں سلمان کا ساتھ نہ ملنے پر پدما نے ان سے علیحدگی اختیار کرنا درست سمجھا۔ دونوں نے باہمی رضامندی سے طلاق لے لی۔ دونوں آج بھی اچھے دوست ہیں۔

پدما جو اس بیماری کے درد کو سمجھتی ہیں، نے 2009 میں ‘اینڈومیٹرائیوسس فاؤنڈیشن آف امریکہ’ کی بنیاد رکھی تاکہ اینڈومیٹرائیوسس کے علاج تک رسائی اور آگاہی میں اضافہ کیا جا سکے۔ اس کے علاوہ بھی ان کی بہت سی کامیابیاں ہیں۔ انہوں نے براوو نامی امریکی ٹی وی چینل پر مشہور کوکنگ شو ‘ٹاپ شیف’ کی میزبانی کی۔ وہ خود بھی ایک بہتر شیف ہے۔ انہوں نے کھانا پکانے پر بہت سی کتابیں لکھی ہیں۔

2009 میں پدما کو ٹیڈ فورٹسمین سے پیار ہو گیا، جس نے ایک بار شہزادی ڈیانا کو ڈیٹ کیا تھا۔ دونوں رشتے میں چلے گئے۔ ٹیڈ کے ساتھ اپنے تعلقات میں وقفے کے دوران، پدما کا رابطہ وینچر کیپٹ لسٹ ایڈم ڈیل سے ہوا، جس کی وجہ سے ان کی ایک بیٹی بھی ہوئی۔ اس کے بعد پدما نے ایک بار پھر ٹیڈ کے ساتھ اپنا رشتہ شروع کیا۔ ٹیڈ اپنا نام ایڈم ڈیل کی بچی کو دینا چاہتی تھی لیکن پدما نے اسے ایڈم ڈیل کے ساتھ ناانصافی سمجھا۔ ایک طویل قانونی جھگڑے کے بعد پدما کی بیٹی کا نام ڈیل پڑ گیا۔ بچی کا نام کرشنا لکشمی ڈیل تھا۔ دریں اثنا، ٹیڈ فورٹسمین 2011 میں دماغی کینسر کی وجہ سے انتقال کر گئے تھے۔

پدما اب اپنی بیٹی کرشنا کے ساتھ اچھی خوش و خرم زندگی گزار رہی ہیں۔

یہ بھی پڑھ سکتے

قومی ترجمان کا ٹیلیگرام گروپ جوائن کرنے کے لیے یہاں کلک کریں!

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button